کراچی ڈسٹرکٹ میونسپل کارپوریشن ملیر کا 58 لاکھ 77 ہزار 506روپے سر پلس ٹیکس فری بجٹ پیش

کراچی (پی ایف پی) ڈسٹرکٹ میونسپل کارپوریشن ملیر نے 58 لاکھ 77 ہزار 506روپے سر پلس ٹیکس فری بجٹ پیش کردیا،بجٹ برائے سال 2016-17کےلئے محاصل کی وصولی کا اندازہ تین ارب 15کروڑ 79 لاکھ65 ہزار اور231 روپے ، جبکہ اخراجات کا اندازہ تین ارب 15 کروڑ 20 لاکھ 87 ہزار 725 روپے ہے اس طرح یہ بجٹ58 لاکھ 77 ہزار 506روپے سر پلس ہے، ترقیاتی اسکیموں کی مد میں ایک خطیر رقم ایک ارب 48 کروڑ 34 لاکھ روپے رکھے گئے ہیں ۔جمعرات کو ایڈمنسٹریٹر طارق حسین مغل نے،.AOبابو مل S.Eنصراللہ میمن ، ڈائریکٹر انفارمیشن عدنان محمد خان ،D.Aشریف بلوچ ودیگر افسران کے ہمراہ مرکزی دفتر میں بجٹ میزانیہ برائے سال2016-17پیش کیا ۔اس موقع پر ان کا کہنا تھا کہ اپنے وسائل مےں رہتے ہوئے بہترین اور مثالی بجٹ بنانے کی کوشش کی گئی ہے جس سے اہلیان زیادہ سے زیادہ مستفید ہوسکے ڈسٹرکٹ ملیر کی بےشتر آبادی پسماندہ علاقوں پر مشتمل ہے جبکہ بلدیاتی سہولیات کی فراہمی ہماری تر جیحات میں شامل ہے
اس لئے ضلع ملیر کے شہری علاقوں کے ساتھ ساتھ مضافاتی علاقوں گوٹھوں میں ترقیاتی اسکیموں کے لئے رقم خاص طور پر مختص کی گئی ہے جبکہ بن قاسم اور ملیر کے علاقوں میں وہاں کی عوام کے لئے فیملی پارکس کی تعمیر کے حوالے سے بھی رقم مختص کی گئی ہے ،ڈینگی نگلریا اور دیگر قدرتی آفات سے نمٹنے کے لئے بجٹ میں رقم مختص کی گئی اور حالیہ گرمی کے پیش نظرہےٹیاسٹروک سے آگاہی سے متعلق پروگرام کو بھی بجٹ کا حصہ بنایا گیا ہے ،ملازمین جو ادارے کو چلانے میں اہم کردار ادا کرتے ہیں،
ان کے لئے تنخواہوں میں اضافے کے ساتھ ساتھ حج وعمرہ اسکیم ہیلتھ پالےسی انشورنس اسکیم وبیماری کے کے حوالے سے ہونے والے اخراجات کی ادائےگی اور دوران ملازمت انتقال کی صورت میں کفن دفن کا خرچہ دینے کے لئے پالیسیوں کو مزید بہتر بنایا گیا،جس کے لئے ر قم مختص کردی گئی ہے ۔ان خیالات کا اظہار اےڈمنسٹرےٹر طارق حسین مغل نے بجٹ میزانےہ برائے سال2016-17پیش کرنے کے موقع پر کیا ۔انہوں نے اس موقع پر تفصیلات سے آگاہ کرتے ہوئے بتایا ہماری ہر ممکن کاوش کے تحت ضلع مےونسپل کارپورےشن ملےرکراچی کے بجٹ کو عوام دوست بنایا گیا ہے ۔ 2011 سے 2015 تک OZT (اکٹرائے ضلع ٹےکس) کے متبادل فنڈز کٹوتی کے ساتھ فراہم کئے گئے جس کی وجہ سے عوام کو سہولےات کی فراہمی مےں تعطل پےدا ہوا ، رقوم کی بروقت ادائےگی نہ ہونے کی وجہ سے پےٹرول اور ڈےزل کی فراہمی بھی متاثر رہی جس کی وجہ سے کچرا اٹھا کر ٹھکانے لگانے سمےت دےگر امور کی ادائےگی متاثر ہوئی اور اس کے ساتھ ساتھ ملازمےن کی تنخواہوں کی ادائےگی مےں بھی مشکلات پےش آئےں ۔اس کے علاوہ FBR کی طرف سے 10 کروڑ سے زائد رقم اکاﺅنٹ سے اعتماد میں لیے بغےر نکال لئے گئے جو FBR کی طرف سے بلدےہ ملیر کی عوام اور ملازمین کے ساتھ ظلم و زےادتی کے علاوہ کچھ نہےں کیونکہ ےہ ساری رقم تنخواہوں کی ادائےگی کی مد میں بچا کر رکھی گئی تھی جو FBR کی جانب سے اب تک واپس نہیں کئے گئے ۔
ہم وزےر اعلیٰ سندھ سےد قائم علی شاہ کے انتہائی مشکور ہیں جنھوں نے بروقت حصوصی فنڈ جاری کر کے ملازمین کی ننخواہوں کی ادائےگی کو ےقینی بنایا۔ 2001 میں بلدےاتی اداروں کے تےن محکمے جس میں تعلےم، لوکل ٹےکس اور صحت شامل ہیں KMC کے حوالے کے گئے تھے جو تقرےباً 15 سال کی بعد ضلعوں کو واپس کر دئے گئے ہیں لیکن افسوس کے ساتھ کہنا پڑ رہا ہے کہ ان محکموں کے ملازمین کے حقوق بھی صحیح طرح سے ادا نہیں کئے گئے کچھ ملازمین تو 15 سال سے اےک ہی گرےڈ میں امور سرانجام دے رہے ہیں اےسے تمام ملازمین کی مشکلات کو دور کرنے کےلئے بڑے پےمانے پر اقدامات کئیے جا رہے ہیں۔ حصوصی طور پر محکمہ صحت بلدےہ ملیر کی عوام کےلئے اسپتال اور ڈسپنسری کی تعمیر و مرمت کےلئے خاطر خواہ رقم مختص کی گئی ہے ، اسی طرح محکمہ تعلیم بلدیہ ملیر کے طلباءو طالبات کےلئے نئے اسکولوں کی تعمیر و مرمت اور بچوں کےلئے تعلیمی وظائف کےلئے بھی حصوصی گرانٹ رکھی گئی ہے ۔ آئندہ مالی سال کے بجٹ مےں مالی توازن قائم رکھنے کے ساتھ ساتھ اخراجت کا تخمےنہ آمدنی کے ذرائع کو مد نظر رکھتے ہوئے لگاےا گےا ہے اور کوشش کی گئی ہے کہ وسائل کی تقسےم اور بلدےاتی امور کی انجام دہی آمدنی کے ذرائع کو سامنے رکھتے ہوئے تےار کئے گئے ہےں۔ انہوں نے بتا کہ بجٹ میںضلع مےونسپل کارپورےشن ملےر کراچی کے تحت جاری ترقیاتی اسکیموں پر20 کروڑ روپے ،واٹر سپلائی پر11 کروڑ روپے رکھے گئے ہےں تاکہ کراچی کے دہی علاقوں میں پےنے کے پانی کے مسائل پر قابو پاےا جا سکے۔نکاسی آب پر21 کروڑ روپے رکھے گئے ہیں۔سڑکوںکی تعمیر و مرمت پر20 کروڑ روپے رکھے گئے تاکہ اندرونی روڈوں کی تعمیرات بروقت ہو سکے۔پارکوں اور گرےن بےلٹ کی تزین و آرائش و شجر کاری ، باغبانی کےلئے 14 کروڑ 21 لاکھ روپے رکھے گئے ہیں۔
اسٹریٹ لائٹس کی مد میں17کروڑ 10 لاکھ روپے رکھے گئے ہیں اس میں موجودہ لائٹس کو سولر سسٹم سے تبدےل کرنے کا مرحلہ وار کام شروع کیا جا رہا ہے۔بلدےہ ملیر کے طلبا ءو طالبات کےلئے معیاری تعلےم کے حصول اور اسکولو ں کی تعمیر و تزہن و آرئش کے علاوہ طلباءو طالبات کےلئے وظائف کی مد میں 3 کروڑ 50 لاکھ 25 ہزار کی رقم مختص کی گئی ہے۔اسپتال اور ڈسپنسری کےلئے مشینری اور ادوےات کی خرےداری جبکہ اسپتال اور ڈسپنسری کی تزہن و آرائش کےلئے 2 کروڑ 67 لاکھ 25 ہزار روپے کی رقم مختص کی گئی ہے ۔
سالڈ ویسٹ مینجمنٹ پر 2 کروڑ روپے رکھے گئے ہےں کہ پورے علاقے میں کچرا اٹھانے کا کام جدےد طرےقے سے سرانجام دیا جا سکے۔کچرا کنڈی و عوامی بےت الخلاءکی تعمےر کےلئے 2 کروڑ روپے رکھے گئے ۔ جبکہ مشینری و گاڑیوں کی خرید ومرمت کی مد میں 12کروڑ 30 لاکھ روپے رکھے گئے ۔ ضلع مےونسپل کارپورےشن ملےر کراچی کی جاری آمدنی دو ارب 4 کروڑ روپے اور اپنے زرائع سے آمدنی 28 کروڑ روپے ہے جبکہ اصل محاصل 82 کروڑ 42 لاکھ 95 ہزار 800 روپے ہے ،ضلع مےونسپل کارپورےشن ملےر کراچی کے غیر ترقیاتی اخراجات اےک ارب 66 کروڑ 86 لاکھ 87 ہزار 725 روپے ہے ،جبکہ ترقیاتی اخراجات اےک ارب 48 کروڑ 34 لاکھ روپے ہے ۔ضلع مےونسپل کارپورےشن ملےر کراچی کے محاصل کے ذرائع میں واٹر چارجز ، مویشی منڈی ، میرج گارڈن ، ٹیلی ٹاور کی تنصیب کےلئے NOCکا اجراء، دودھ دینے والے مویشیوں کی فیس ، غیر منقولہ پراپرٹی ٹیکس ، اجراءٹینڈر کی فیس، ملازمین سے قرض کی وصولی اور بینک منافع وغیرہ شامل ہیں،آکٹرائے و ضلع ٹیکس میں آمدنی کا تخمینہ اےک ارب 77 کروڑ روپے ہے جبکہ جائیداد ٹیکس کی مد میں آمدنی کا تخمینہ3 کروڑ روپے ہے۔
لوکل ٹےکسس سے اشتہارات کی مد میں 2 کروڑ آمدنی کی اندازہ لگاےا گےا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ہماری کوشش ہے کہ کراچی کے مضافاتی پسماندہ علاقوں پر خصوصی توجہ دےتے ہوئے ان علاقوں کو کراچی کے شہری علاقوں کے مساوی سہولیات کے تحت لایا جا سکے اور اس مقصد کے حصول کے لئے کراچی کے مضافاتی علاقوں میں بڑے پیمانے پر ترقیاتی اسکیموں کا اجراءکیا جارہا ہے ۔ خصوصاً بن قاسم اور ملےر کے شہری علاقوں مےں فےملی پارک اور کھیل کے مےدانوں کی تعمےر کی اسکےمےں شامل ہےں اس کے ساتھ ساتھ مختلف مذاہب کی عبادت گاہوں کی تزئےن و آرائش کےلئے خصوصی رقم مختص کی گئی ہے ۔ آلودگی ایک بین الاقوامی مسئلہ ہے اور کراچی کے شہریوں کو بھی اس مسئلے کا سامنا ہے ضلع مےونسپل کارپورےشن ملےر کراچی نے آلودگی کے مسئلے سے احسن طرےقے سے نمٹنے کےلئے ضلع مےونسپل کارپورےشن ملےر کی حدود مےں شجر کاری کےلئے عوام کو مفت پودے فراہم کےئے جا رہے ہےں۔ جس میں تقریباً اس سال 10 ہزار پودے لگائے گئے ہیں اور آئندہ سال اس تعداد کو دگنا کیا جائے گا۔

Leave your vote

0 points
Upvote Downvote

Total votes: 0

Upvotes: 0

Upvotes percentage: 0.000000%

Downvotes: 0

Downvotes percentage: 0.000000%

اپنا تبصرہ بھیجیں