کراچی میں بھارتی جارحیت کے خلاف علماء و مشائخ کا کنونشن

بھارت پاکستان کی امن پسندی کو کمزوری نہ سمجھے، حاجی حنیف طیب کا خطاب
کراچی(پی ایف پی)نظام مصطفی پارٹی کے سربراہ سابق وفاقی وزیرڈاکٹرحاجی محمدحنیف طیب کی دعوت پربھارتی جارحیت کی شدیدالفاظ میں مذمت اور پاکستانی افواج سے بھرپورتعاون کرنے کے لئے علماء ومشائخ کنونشن،پاکستان کے تحفظ کے عنوان پر قادری مسجد (سولجربازار) منعقد ہوا۔جس میں بانی پاکستان قائداعظم محمدعلی جناح کے رفیق کاراور ممتازروحانی پیشواامیرملت پیر سیدجماعت علی شاہ کے سجادہ نشین پیرسیدمنورعلی شاہ نے بطورمہمان خصوصی شرکت کی۔ جبکہ کنونشن کی صدارت پروفیسرڈاکٹرفریدالدین قادری نے کی کنونشن میں مفتی عبدالعلیم قادری ،شبیر احمدقاضی،الحاج محمدرفیع ،محمدحسین لاکھانی، قاری محمداشرف گورمانی،مولانااکرم سعیدی،ڈاکٹرامین جہانگیری ،مفتی ذیشان رسول،پیر زادہ غلام حسین چشتی ،مولاناشاہدین اشرفی،عاشق حسین سعیدی،مفتی محمدعمران قادری ،مولاناسیف اﷲسعیدی،منیب بلوانی ایڈووکیٹ،محمدصابرایڈووکیٹ،اویس قادری سمیت ودیگرعلماء ومشائخ وکارکنان نے شرکت کی۔

کنونشن سے پیرسیدمنورعلی شاہ نے اظہارخیال کرتے ہوئے کہاکہ پاکستان نے ثابت کردیاکہ وہ ایک امن پسندملک ہے اور دہشت گردی کے خاتمے کے لئے اس کی قربانیاں لازوال ہیں ۔جس کی تازہ ترین مثال پاکستان پر حملہ کرنے والے گرفتاربھارتی پائلٹ کوامن کے خاطر غیرمشروط طورپرواپس کرنااور ایک پائلٹ کو زخمی حالت میں ہے اس کاعلاج کیاجارہے۔پاکستان جارحیت اور انتہاء پسندی کے قطعاًخلاف ہے اور عالمی معاہدات کی پاسداری اس کے اخلاقیات کا ایک جزہے۔لیکن اس امن پسندی کو بھارت کمزوری ہرگزنہ سمجھے۔

ڈاکٹرحاجی محمد حنیف طیب نے کہاکہ بھارت،اسرائیل کاپاکستان اور اسلام مخالف گٹھ جوڑبے نقاب ہوچکاہے۔بھارت، اسرائیلی اسلحے کا سب سے بڑاخریدارہے۔اسرائیل سے سب سے زیادہ اسلحہ بھارت ہی خریدرہاہے ،جس کے شواہد پاکستان میں بھارتی دراندازی کے موقع پر مل چکے ہیں۔بھارت یہ اسلحہ پاکستان اور کشمیرکے مسلمانوں کے قتل عام کے لئے استعمال کررہاہے۔لیکن افسوس ہے کہ اوآئی سی جیسا معتبر ادارہ بھارتی وزیرخارجہ کو پاکستان پر، بانی ممبر ہونے کے باوجود،ترجیح دے رہاہے اورششماسوراج کو اجلاس میں شرکت کے لئے دعوت نامہ دے کر لاکھوں مسلمانوں کی دل آزاری کی گئی ہے۔

کنونشن سے ڈاکٹرفرید الدین قادری،مفتی عبدالعلیم قادری،شبیر احمدقاضی،الحاج محمدرفیع،قاری محمداشرف گورمانی ،محمدحسین لاکھانی ،مولانااکرم سعیدی نے کہاکہ اوآئی سی،سلامتی کونسل اور دیگر ادارے اس بات کو دنیاکے سب سے بڑے دہشت گردمودی یہ کیوں نہیں پوچھتے کہ اُس نے عالمی امن کو داؤ پر کیوں لگایا ہواہے؟پاکستان سے مذاکرات کے بجائے جنگ کو ہواکیوں دے رہاہے؟بھارتی تجزیہ کا راور اینکر جلتی پرتیل کا کام کررہے ہیں اور جنگی فضا کو بھڑکانے کی بات کررہے ہیں۔علماء ومشائخ کنونشن میں تحفظ پاکستان کے حوالے اس بات کا اعادہ کیاگیا کہ پاکستان بنانے میں علماء ومشائخ کی کاوشیں ناقابل فرامو ش ہیں اور پاکستان کو دشمنوں سے بچانے کے لئے شمع رسالت کے پروانے پاک فوج سے بھرپورتعاون کرنے کو تیارہیں۔کنونش میں بھارتی جارحیت کی شدیدالفاظ میں مذمت کی گئی۔کنونشن میں متفقہ طورپرقراردادپیش کی گئی جو پریس میں بعد میں جاری کی جائے گی۔

Leave your vote

0 points
Upvote Downvote

Total votes: 0

Upvotes: 0

Upvotes percentage: 0.000000%

Downvotes: 0

Downvotes percentage: 0.000000%

اپنا تبصرہ بھیجیں