کاروباری ماحول کو پیدا کیے بغیر ٹیکس نیٹ کو وسعت نہیں دی جاسکتی،شیخ محمد ارشد

لاہور (پی ایف پی) لاہور چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے صدر شیخ محمد ارشد نے حکومت پر زور دیا ہے کہ ٹیکس وصول کرنے اور سمگلنگ کی روک تھام کے ذمہ دار اداروں کے عملے کے صوابدیدی اختیارات میں فورا کمی لائی جائے کیونکہ ان کا بے جااستعمال کاروباری ماحول کو بْری طرح خراب کررہا ہے۔ دوستانہ کاروباری ماحول پیدا کیے بغیر ٹیکس نیٹ کو کسی طرح بھی وسعت نہیں دی جاسکتی۔ ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ ٹیکس وصول کرنے والا عملہ اپنے صوابدیدی اختیارات کا غیرضروری استعمال کرکے تاجروں کو پریشان کررہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ کبھی تو سمگل شدہ مال کی چیکنگ کے نام پر مارکیٹوں کے باہر ناکے لگاکر تاجروں کو بْری طرح پریشان کیا جاتا ہے اور کبھی مارکیٹوں میں چھاپے مار کر ہراساں کیا جاتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اگر سمگل شدہ اشیاء ملک میں آرہی ہیں تو اس کی ذمہ داری تاجروں پر نہیں بلکہ ان متعلقہ اداروں پر عائدہوتی ہے جو سمگلنگ کو روکنے میں ناکام ہیں لیکن اس کی ذمہ داری قبول کرنے کے بجائے تاجروں کے لیے مسائل پیدا کیے جارہے ہیں۔ لاہور چیمبر کے صدر نے کہا کہ فیڈرل بورڈ آف ریونیو سمیت تمام وفاقی و صوبائی اداروں کو تاجروں کے لیے سہولیاتی مراکز کا کردار ادا کرنا چاہیے لیکن صورتحال اس کے برعکس ہے اور تاجروں کی شکایات میں دن بدن اضافہ ہورہا ہے جو معیشت کے لیے کوئی اچھا شگون نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ ٹیکس وصول کرنے اور سمگلنگ پر قابو پانے والے اداروں کے صوابدیدی اختیارات کی زد میں زیادہ تر وہ تاجر آرہے ہیں جو قانونی کاروبار کرتے ہیں۔ لاہور چیمبر کے صدر نے کہا کہ صوابدیدی اختیارات میں کمی لائے بغیر غیرملکی سرمایہ کار تو ایک طرف مقامی سرمایہ کاروں کو بھی مزید سرمایہ کاری پر آمادہ کرنا ممکن نہیں ہوگالہذا وفاقی وزیر خزانہ اسحاق ڈار صورتحال کا فوری نوٹس لیں اور ٹیکس حکام کے صوابدیدی اختیارات میں کمی لانے کے لیے فوری اقدامات اٹھائیں۔

Leave your vote

0 points
Upvote Downvote

Total votes: 0

Upvotes: 0

Upvotes percentage: 0.000000%

Downvotes: 0

Downvotes percentage: 0.000000%

اپنا تبصرہ بھیجیں