پیپلز پارٹی کی’سلام شہداء‘ریلی، جیالے پرجوش

پیپلزپارٹی کی سلام شہداء ریلی کا بلاول ہاؤس سے آغاز ہوگیا ہے، پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری ریلی کی قیادت کررہے ہیں، خصوصی ٹرک پر بلاول، سابق وزرا اعظم یوسف رضا گیلانی اور راجہ پرویز اشرف سمیت مرکزی رہنما سوار ہیں۔ ریلی کے آغاز پر فریال تالپور نے بلاول بھٹو زرداری کے بازو پر امام ضامن باندھا۔

ریلی شہر کے مختلف علاقوں سے ہوتی ہوئی کارساز پر ختم ہوگی، اس دوران چیئرمین بلاول بھٹو زرداری 4مقامات پر خطاب کریں گے۔

پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹوزرداری نے بلاول چورنگی پر خطاب کرتے ہوئے کہا کہ لوگ اتنے مایوس ہیں کہ شیر کے شکار کا ٹھیکہ ایک کھلاڑی کو دیا گیا، ساتھی مایوس نہ ہوں تیر کمان سے نکل گیا،ہےجہاں ظلم کے خلاف جنگ ہو گی وہاں کربلا کا میدان سجے گا،ہم زبان اور برادری کی سیاست سے آزادی چاہتے ہیں۔

بختاور بھٹو اورآصفہ بھٹو سمیت پیپلز پارٹی کی خواتین رہنما فریال تالپور،شیریں رحمان ،شہلا رضا بھی ریلی میں شریک ہیں۔

وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ کا کہنا ہے کہ ریلی سے جمہوریت کو تقویت ملے گی جبکہ پی پی رہنما آغا سراج درانی کہتے ہیں کہ آج کی ریلی بہت بڑی اور تاریخی ہوگی۔

سانحہ کارساز کی یاد میں سلام شہدا ریلی کے سلسلے میں ڈرگ روڈ سے بلوچ کالونی تک شارع فیصل کےدونوں ٹریک بندکردیے گئے ۔جانثارانِ بینظیر بھٹو کےایک ہزار جیالے سیکورٹی کے فرائض انجام دے رہے ہیں ۔

جیالوں کا جوش و جذبہ قابل دید ہے ، جو ڈھول کی تھاپ پر رقص کررہے ہیں، کراچی میں پیپلز پارٹی کی ریلی میں جوشیلے جیالوں نے تو رنگ جمایا ہی ہے، حیدرآباد سمیت سندھ کے مختلف شہروں سے بھی کراچی آنے والے قافلوں میں بھی جوش عروج پر ہے۔

کراچی میں پیپلزپارٹی کے تحت نکالی جانے والی ریلی کے سلسلے میں سیکورٹی کے سخت انتظامات کیے گئے ہیں۔

ادھربلاول ہاؤس کے قریب سے مشکوک شخص کو حراست میں لے لیا گیا ہے۔ ایس ایس پی ساؤتھ زون مشکوک شخص کے پاس سے موبائل فون برآمدہوا ہے۔

ثاقب اسماعیل میمن کا کہنا ہے کہ حراست میں لیا گیا شخص مشکوک انداز میں وڈیو بنارہا تھا۔

Leave your vote

0 points
Upvote Downvote

Total votes: 0

Upvotes: 0

Upvotes percentage: 0.000000%

Downvotes: 0

Downvotes percentage: 0.000000%

اپنا تبصرہ بھیجیں