پھل لیکر آنے والے درجنوں ایرانی کنٹینرز کو کوئٹہ میں روک لیا گیا

قانونی دستاویزات مکمل ہونے کے باوجود کنٹینرز روکنے سے کروڑوں کا مال پڑا پڑا خراب ہورہا ہے، درآمد کنندگان

کوئٹہ (پی ایف پی ) ایران سے پھل لیکر آنے والے درجنوں ایرانی کنٹینرز کو کوئٹہ میں روک لیا گیا۔ درآمد کنندگان کا کہنا ہے کہ قانونی دستاویزات مکمل ہونے کے باوجود کنٹینرز روکنے سے کروڑوں روپے کا مال پڑا پڑا خراب ہورہا ہے۔ تفصیلات کے مطابق ایران سے انگور اور کیوی لیکر درجنوں کنٹینرز چار دن قبل کوئٹہ پہنچے ہیں تاہم انتظامیہ نے کنٹینرز کو کراچی ، لاہور اور اسلام آباد جانے سے روک دیا۔ کنٹینرز روکے جانے کے باعث بیس سے زائد ایرانی ڈرائیورز بھی پریشان ہیں۔ ایران سے پھل درآمد اور برآمد کرنے والے تاجر حاجی ولی خان نے بتایا کہ پاک ایران سرحد پر کلیئرنس اور تمام قانونی دستاویزات مکمل ہونے کے باوجود کنٹینرز کو روکا گیا ہے۔ کنٹینرز میں کروڑوں روپے کا پھل موجود ہے جو خراب ہورہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ایران کے ساتھ آزادانہ تجارت کے معاہدے کے تحت قانونی دستاویزات رکھنے والے ایرانی کنٹینرز پاکستان میں کہیں بھی جاسکتے ہیں۔ حاجی ولی خان بڑیچ نے کہا کہ ہم ایران سے تازہ پھل ایرانی ریفر کنٹینرز میں کراچی، لاہور اور اسلام آباد کی منڈیوں تک لے جانا چاہتے ہیں کیونکہ ایرانی ریفر کنٹینرز میں ایئر کنڈیشن اور دیگر جدید سہولیات ہوتی ہیں جس کی وجہ سے پھل خراب نہیں ہوتے۔مقامی ٹرانسپورٹرز کے پاس ایسے معیاری کنٹینرز اور بڑی گاڑیاں انتہائی کم تعداد میں ہیں جس میں پھل خراب ہوئے بغیر منڈی تک پہنچایا جاسکے۔ہم مقامی ٹرانسپورٹرز کی گاڑیوں میں پھل منڈیوں تک لے جانے کیلئے تیار ہیں لیکن ان کے پاس مطلوبہ تعداد میں جدید سہولیات سے آراستہ ریفر کنٹینرز موجود ہی نہیں۔ مقامی ٹرانسپورٹرز فروٹ ایرانی ریفرکنٹینرز کی بجائے اپنی غیر معیاری گاڑیوں میں ترسیل چاہتے ہیں۔ انتظامیہ اور کوئٹہ چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹریز پھل درآمد اور برآمد کرنے والے تاجروں سے مشاورت کی بجائے صرف ٹرانسپورٹرز کے مفادات کا خیال رکھ رہی ہے۔ حاجی ولی خان بڑیچ نے گورنر، وزیراعلیٰ ، صوبائی وزیر داخلہ،وفاقی سیکریٹری مواصلات، چیف سیکریٹری بلوچستان، صوبائی سیکریٹری داخلہ، کمشنر کوئٹہ ، ڈپٹی کمشنر، کسٹم کلکٹر سمیت دیگر اعلیٰ حکام سے مطالبہ کرتے ہیں کہ وہ پھل درآمد اور برآمد کرنے والے تاجروں کو درپیش مسائل کا احساس کرتے ہوئے ایرانی کنٹینرز کو ملک کے دیگر شہروں تک رسائی کی اجازت دے۔ انہوں نے کہا کہ ہم پاکستانی حکام سے مطالبہ کرتے ہیں کہ وہ ایرانی حکام کے ساتھ پاکستانی ٹرانسپورٹرز کے مسائل کے حل کیلئے بات کریں تاکہ ایرانی حدود میں پاکستانی ٹرانسپورٹرز کو درپیش شکایات کا ازالہ ہو

Leave your vote

0 points
Upvote Downvote

Total votes: 0

Upvotes: 0

Upvotes percentage: 0.000000%

Downvotes: 0

Downvotes percentage: 0.000000%

اپنا تبصرہ بھیجیں