سشما،شاہ محمود قریشی

پاک-بھارت وزرائے خارجہ ملاقات منسوخ، شاہ محمود کا مایوسی کا اظہار

اسلام آباد(پی ایف پی)وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ بھارت کا اقوام متحدہ کے جنرل اسمبلی کے اجلاس میں ہم منصب سے ملاقات سے معذرت پر حیران ہوں۔

ان کا کہنا تھا کہ ’پاکستان خطے کی بہتری چاہتا ہے، خبر سن کر افسوس ہوا‘۔

انہوں نے دعویٰ کیا کہ بھارتی دہشت گردی کے متعدد ثبوت ہمارے پاس بھی ہیں، تاہم پاکستان ماضی کو چھوڑ کر آگے بڑھنا چاہتا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ بھارت کو سفارتی آداب کا خیال رکھنا چاہیے تھا۔

انہوں نے کہا کہ ہماری سوچ مثبت ہے، لگتا ہے کہ پاکستان کا مثبت رویہ بھارت میں سیاست کی نذر ہوگیا۔

وزیر خارجہ کا کہنا تھا کہ ’لگتا ہے کہ بھارت میں آنے والے انتخابات کی تیاری کی جارہی ہے، ہندوستان اپنے خول سے باہر نہیں نکل پارہا ہے‘۔

ان کا کہنا تھا کہ ملاقات سے پیچھے ہٹ کر بھارت نے خطے کی خدمت نہیں کی، پاکستان ہمسایوں کے ساتھ اچھے تعلقات چاہتا ہے۔

انہوں نے بتایا کہ پاکستان اب بھارت سے دوبارہ ملاقات کی درخواست نہیں کرے گا، معاملات وہاں ہی حل ہوتے ہیں جہاں باہمی عزت اور احترام ہو، بھارت کی سیاست تقسیم نظر آرہی ہے۔

جنرل اسمبلی اجلاس کے حوالے سے ان کا کہنا تھا کہ اجلاس سے خطاب میں پاکستان کامؤقف پیش کروں گا اور کوئی ایسی بات نہیں کروں گا جس سے معاملہ مزید پیچیدہ ہو۔

ان کا کہنا تھا کہ معاملات سلجھانا مشکل ہوتا ہے اور الجھانا آسان۔

واضح رہے کہ اس سے قبل بھارتی میڈیا ٹائمز آف انڈیا کی رپورٹ کے مطابق بھارت نے وزرائے خارجہ کے درمیان ملاقات کی حامی بھرنے کے بعد ملاقات منسوخ کردی۔

رپورٹ کے مطابق پاکستانی وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی اور ان کی بھارتی ہم منصب سشما سوراج کے درمیان ملاقات مقبوضہ جموں و کشمیر میں 3 پولیس اہلکاروں کی ہلاکت اور کشمیری مجاہد برہان وانی کی تصویر والے پوسٹل اسٹیمپس جاری کیے جانے کے باعث منسوخ کی گئی۔

بھارتی دفتر خارجہ کے ترجمان رویش کمار نے فیصلے سے آگاہ کرتے ہوئے بیان دیا کہ ‘حالیہ واقعات یہ ظاہر کرتے ہیں کہ پاکستان سے کسی بھی طرح کے مذاکرات بے معنی ہیں۔’

Leave your vote

0 points
Upvote Downvote

Total votes: 0

Upvotes: 0

Upvotes percentage: 0.000000%

Downvotes: 0

Downvotes percentage: 0.000000%

اپنا تبصرہ بھیجیں