پاناما اسکینڈل:آئینی درخواستوں پر فریقین کو نوٹس

سپریم کورٹ نے پاناما لیکس سے متعلق پی ٹی آئی، جماعت اسلامی، شیخ رشید اور طارق اسد ایڈووکیٹ کی درخواستوں پر وزیراعظم سمیت فریقین کو نوٹس جاری کردیے، وطن پارٹی کی درخواست قبل از وقت قرار دے کر مسترد کردی گئی۔

چیف جسٹس انورظہیر جمالی نے کہا کہ ہم کسی سیاسی ارینا میں داخل نہیں ہونگے،وہاں مداخلت کرینگے جہاں انتظامیہ بنیادی حقوق کے تحفظ میں ناکام ہو،ہم سیاسی محاذ آرائی کا حصہ نہیں بنیں گے،عدالت پہلے ہی جوڈیشل کمیشن بنانے کی حکومتی درخواست واپس کرچکی ہے۔

سپریم کورٹ میں پانامالیکس سے متعلق درخواستوں کی سماعت چیف جسٹس کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے کی۔طارق اسد ایڈووکیٹ نے کہا کہ اسلام آباد کو بند کرنے کی دھمکی دی جارہی ہے، پورا اسلام آباد چیخ رہاہے، اس پر عدالت نے کہا کہ اس درخواست کو بھی دیکھ لیتے ہیں۔۔

تحریک انصاف کے وکیل حامد خان نے دلائل دیتے ہوئے کہا کہ پاناما پیپرز پر دنیا بھر میں کارروائی ہوئی، پاکستان میں اس معاملے میں کوئی عملی اقدامات نہیں کیے گئے۔

شیخ رشید نے کہا کہ کرپٹ حکمرانوں سے ہماری جان چھڑائیں، عدالت نے تحریک انصاف، جماعت اسلامی اور شیخ رشید کی درخواست پر وزیراعظم سمیت تمام فریقین کو نوٹس جاری کرتے ہوئے سماعت 2 ہفتوں کے لیے ملتوی کردی۔

طارق اسد ایڈووکیٹ کی درخواست کی سماعت بھی انہی تین درخواستوں کے ساتھ ہوگی، تاہم وطن پارٹی کی درخواست عدالت نے قبل از وقت قرار دے کر مسترد کردی۔

Leave your vote

0 points
Upvote Downvote

Total votes: 0

Upvotes: 0

Upvotes percentage: 0.000000%

Downvotes: 0

Downvotes percentage: 0.000000%

اپنا تبصرہ بھیجیں