ٹی او آرز پارلیمانی کمیٹی ۔۔۔۔باقی اپوزیشن جماعتوں نے بھی ہاتھ کھڑے کر دیئے

اسلام آباد(پی ایف پی) پانامہ لیکس پر متفقہ ٹرمز آف ریفرنسز( ٹی او آرز ) بنانے کیلئے قائم پارلیمانی کمیٹی سے اپوزیشن سے تعلق رکھنے والی چار سیاسی جماعتوں کے علیحدگی اختیار کرنے کے فیصلے کے بعد کمیٹی اپنے منطقی انجام کے قریب پہنچ گئی ہے ۔ ذرائع کے مطابق پاکستان پیپلز پارٹی اور تحریک انصاف کے بعد جماعت اسلامی اور مسلم لیگ (ق) نے بھی پانامہ لیکس پانامہ لیکس کے حوالے سے قائم پارلیمانی کمیٹی میں نہ جانے کا عندیہ دیتے ہوئے کہا ہے کہ وہ ٹی او آرز پر اپوزیشن جماعتوں کا فیصلہ تسلیم کریں گی جس کے بعد اپوزیشن کی چھ میں سے چار جماعتوں نے پارلیمانی کمیٹی سے علیحدگی کا پیغام حکومت تک پہنچا دیا ہے جبکہ عوامی نیشنل پارٹی اور متحدہ قومی موومنٹ بڑی اپوزیشن جماعتوں کی مخالفت کے باوجود اب بھی پارلیمانی کمیٹی کا حصہ رہنے کی خواہش مند ہیں متحدہ اپوزیشن نے حکومت کے چار میں سے تین ٹی او آرز من وعن تسلیم کئے لیکن حکومتی وزراء کمیٹی میں تاخیری حربے استعمال کرتے رہے –
پارلیمانی کمیٹی صرف ابتدائیہ پر متفق ہوسکی ٹی او آرز کے حوالے سے پارلیمانی کمیٹی کے بہت سے اجلاس بے نتیجہ رہے ہر اجلاس کے بعد اپوزیشن جماعتوں کا کہنا ہوتا ہے کہ حکومت اور اپوزیشن کے درمیان ڈیڈ لاک برقرار رہے لیکن حکومتی ٹیم کی طرف سے کہا جاتا تھا کہ اجلاس میں پیش رفت ہوئی ہے متحدہ اپوزیشن وزیراعظم اور ان کے خاندان کا احتساب سب سے پہلے چاہتی تھیں لیکن حکومتی اراکین وزیراعظم اور ان کے خاندان کو بچانے کیلئے اپنی تمام تر کوششیں کررہے تھے کہ کسی نہ کسی طرح سے وزیراعظم اور ان کے خاندان کا احتساب نہ ہو جبکہ اپوزیشن کا کہناہے کہ وزیراعظم نے خود کو احتساب کیلئے پیش کیا ہے اور ہم چاہتے ہیں کہ وزیراعظم کو موقع دیا جائے کہ وہ اپنے آپ کو کلیئر کرواسکیں۔
جب متحدہ اپوزیشن کو اندازہ ہوا کہ حکومتی اراکین وزیراعظم اور ان کے خاندان کا احتساب نہیں چاہتے تو اپوزیشن جماعتوں کا مشاورتی اجلاس پاکستان پیپلز پارٹی کے مرکزی رہنما اعتزاز احسن کی رہائش گاہ پر ہوا جس میں متحدہ اپوزیشن جماعتوں میں سے تحریک انصاف ، پاکستان پیپلز پارٹی ، عوامی مسلم لیگ ، پاکستان مسلم لیگ (ق) جماعت اسلامی نے حصہ لیا جبکہ ایم کیو ایم اور اے این پی کی طرف سے اجلاس میں شرکت نہ کی گئی مشاورتی اجلاس میں حکومت کو چھ پوائنٹ دیئے گئے اور کہا گیا کہ اگر حکومت ان پر اپنا مثبت رویہ رکھتے ہوئے رابطہ کرتی ہے تو متحدہ اپوزیشن ٹی او آرز کے حوالے سے قائم کمیٹی میں جائے گی ورنہ اس سے علیحدہ ہوجائے گی –
جب حکومت کی طرف سے کوئی رابطہ نہ کیا گیا تو پاکستان پیپلز پارٹی اور تحریک انصاف نے پارلیمانی کمیٹی سے علیحدہ ہونے کا فیصلہ کرلیا اور تحریک انصاف نے وزیراعظم کی نااہلی کے لئے الیکشن کمیشن میں پٹیشن دائر کردی ہے جبکہ پاکستان پیپلز پارٹی نے ٹی او آرز کمیٹی سے علیحدگی کا اعلان کرتے ہوئے وزیراعظم کیخلاف الیکشن کمیشن میں پٹیشن اور نیب میں ریفرنس دائر کرنے کا فیصلہ کیا ہے اس حوالے سے پاکستان پیپلز پارٹی کے سیکرٹری جنرل سردار لطیف کھوسہ پارٹی کی جانب سے وزیراعظم کیخلاف الیکشن کمیشن میں پٹیشن اور نیب میں ریفرنس پیش کرینگے پاکستان پیپلز پارٹی وزیراعظم کے ساتھ ساتھ شہباز شریف حمزہ شہباز اور مریم نواز کی نااہلی کیلئے بھی ریفرنس دائر کرے گی اپوزیشن کی طرف سے کمیٹی سے علیحدگی اور الیکشن کمیشن میں ریفرنس دائر کرنے کی وجہ سے حکومت کیلئے مزید مشکلات پیدا کردی ہیں جبکہ حکومتی وزیر دفاعی بیانات دے رہے ہیں کبھی تحریک انصاف اور کبھی پیپلز پارٹی کو تنقید کا نشانہ بنایا جارہا ہے۔

Leave your vote

0 points
Upvote Downvote

Total votes: 0

Upvotes: 0

Upvotes percentage: 0.000000%

Downvotes: 0

Downvotes percentage: 0.000000%

اپنا تبصرہ بھیجیں