ناکام بغاوت کے بعد یونان میں داخل ہونے والے 8 ترک فوجیوں کو سزا

ایتھنز(پی ایف پی) یونان کی عدالت نے بغاوت کی کوشش ناکام ہونے کے بعد پڑوسی ملک میں غیرقانونی طریقے سے داخل ہونے پر 8 ترک فوجیوں کو سزا سنا دی۔غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق یونان کی ایک عدالت نے 8 ترک فوجیوں کو 2 ماہ کی سزا سنائی جو غیر قانونی طریقے سے ہیلی کاپٹر میں بیٹھ کر یونان میں داخل ہوئے تھے
سزا پانے والوں میں 3 میجر، 3 کیپٹن اور 2 سرجنٹ میجر شامل ہیں۔ سماعت کے دوران فوجیوں کے وکیل نے موقف اختیار کیا کہ فوجیوں کو بغاوت سے متعلق کوئی علم نہیں تھا جب کہ حکام کی جانب سے انہیں تین ہیلی کاپٹر دیئے گئے اور حکم دیا گیا کہ انہیں زخمی فوجیوں اور عام شہریوں کو ایک جگہ سے دوسری جگہ منتقل کرنا ہے تاہم ان کے 2 ہیلی کاپٹروں میں اچانک ا?گ لگ گئی جس کے بعد تمام 8 فوجی ایک ہیلی کاپٹر میں سوار ہوئے اور ایک مقام پر قیام کیا جہاں انہیں موبائل فون انٹرنیٹ کے ذریعے معلوم ہوا کہ حکومت کا تختہ الٹنے کی کوشش ناکام ہوگئی
جس کے بعد انہوں نے یونان آنے کا فیصلہ کیا۔یونان کے قانون کے مطابق غیرقانونی طور پر یونان میں داخل ہونے والوں کو 3 سال کی سزا سنائی جاتی ہے تاہم یونان میں داخلے کے فوری بعد ملزمان نے سیاسی پناہ کی درخواست کردی تھی جس کے پیش نظرعدالت نے انہیں 2 ماہ قید کی سزا سنائی۔ادوسری جانب ترک حکومت نے یونان سے فوجیوں کی حوالگی کا مطالبہ کیا ہے تاہم فوجیوں کے وکیل کا کہنا ہے کہ 8 فوجیوں کا ترکی کی فوجی بغاوت میں کوئی کردار نہیں اس لئے اگر انہیں ترک حکومت کے حوالے کیا گیا تو ان کی جان کو خطرہ ہوسکتا ہے۔واضح رہے کہ 15 اور 16 جولائی کی درمیانی شب ترک فوج کے ایک دھڑے نے منتخب حکومت کا تختہ الٹنے کی کوشش کی تھی جسے عوام نے سڑکوں پر ا آکر ناکام بنا دیاتھا۔

Leave your vote

0 points
Upvote Downvote

Total votes: 0

Upvotes: 0

Upvotes percentage: 0.000000%

Downvotes: 0

Downvotes percentage: 0.000000%

اپنا تبصرہ بھیجیں