ملک میں کپاس کی پیداوار میں کمی پر قابوپانے کےلئے ہنگامی بنیادوں پراقدامات کیے جائیں ، اپٹما

کراچی(پی ایف پی)آل پاکستان ٹیکسٹال ملز ایسوسی ایشن (آپٹما) کے چیئرمین طارق سعودنے ایک بارپھر حکومت سے مطالبہ کیاہے کہ ملک میں کپاس کی پیداوار میں کمی پر قابوپانے کے لیے ہنگامی بنیادوں پراقدامات کیے جائیں اور خام کاٹن کی درآمد پر عائد3فی صد امپورٹ ڈیوٹی فوری طورپرختم کی جائے،پیر کے روز جاری کردہ بیان میں طارق سعود نے کہاکہ خام کاٹن کی درآمد پر ڈیوٹی ختم کرنا ضروری ہے تاکہ انڈسٹری کو اپنی ضروریات پوری کرنے کے لیے خام مال موزوں قیمتوں پر دستیاب ہوسکے اور انڈسٹری ملکی معیشت کی ترقی میں اپنا کرداراداکرسکے، چیئرمین آپٹما نے کراچی کاٹن ایسوسی ایشن(کے سی اے) اور کاٹن ایسوسی ایشن آف انڈیا کے حوالے سے کاٹن درآمد سے متعلق وضاحت کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان میں کپاس کی پیداوار کم ہونے کی وجہ سے انڈسٹری نے اپنی ضروریات پوری کرنے کے لیے 3ملین بیلز کاٹن درآمدکی جس میں سے ایک بڑا حصہ بھارت سے درآمد کیاگیا،چیئرمین آپٹما نے بتایا کہ بھارت سے درآمد کردہ کاٹن کی ہزاروں گانٹھیں واہگہ بارڈر پر رکی ہوئی ہیں ، بھارت سے درآمدکی جانے والی اس کاٹن کی پاکستانی درآمدکنندگان ادائیگی بھی کرچکے ہیں لیکن حکومت اس مسئلے کو حل کرنے کے لیے کوئی اقدام نہیں کررہی ہے،انہوں نے حکومت پر زور دیا کہ جو کاٹن پاکستان کی حدود میں آچکی ہے اس کو ریلیز کرنے کے لیے فوری طورپرہدایت جاری کی جائے،آپٹما آزاد تجارت پر یقین رکھتی ہے اور چیئرمین آپٹما نے اس ریجیم کے جاری رکھنے اور کسی بھی قسم کی مداخلت نہ ہونے کی ضرورت پر زور دیا ، توقع ہے کہ پاکستان بھارت سے کاٹن درآمد کرنے کے لیے تمام مطلوبہ اقدامات کرے گا،انہوں نے کاٹن کی درآمد پر عائد تمام ڈیوٹیز اور ٹیکسز کو فوری طورپر ختم کرنے کے مطالبے کو دہرایا تاکہ کاٹن آزاد طریقے سے پاکستان میں درآمدکی جاسکے۔

Leave your vote

0 points
Upvote Downvote

Total votes: 0

Upvotes: 0

Upvotes percentage: 0.000000%

Downvotes: 0

Downvotes percentage: 0.000000%

اپنا تبصرہ بھیجیں