یوم پاکستان

ملک بھر میں یوم پاکستان کی شاندار تقریبات۔ اسلام آباد میں عسکری طاقت کا بھرپور مظاہرہ

اسلام آباد(پی ایف پی)23 مارچ کو یوم پاکستان کے موقع پر اسلام آباد میں شاندار فوجی پریڈ اور عسکری طاقت کا مظاہرہ کیا گیا ۔ اسلام آباد سمیت ملک بھر میں 78 ویں پوم پاکستان کی تقریبات انتہائی جوش و جذبے سے منعقد کی گئیں ۔

مرکزی تقریب اسلام آباد کے شکرپڑیاں پریڈ گراؤنڈ میں منعقدہ ہوئی جس کے مہمان خصوصی صدر مملکت ممنون حسین تھے جبکہ تقریب میں وزیراعظم شاہد خاقان عباسی، تینوں مسلح افواج کے سربراہان اور چیئرمین جوائنٹ چیفس آف اسٹاف کمیٹی جنرل زبیر محمود حیات سمیت دیگر سول و عسکری حکام شریک ہوئے۔

تقریب میں سری لنکا کے صدر متھری پالا سری سینا نے خصوصی طور پر شرکت کی جب کہ متحدہ عرب امارات اوراردن کے فوجی دستے بھی تقریب میں پہلی بار شریک ہوئے۔ اردن کے فوجی دستے نے مختلف دھنیں بجا کر تقریب کو چار چاند لگائے۔

شاندار مشترکہ پریڈ میں پاک فوج، بحریہ، فضائیہ اور سول آرمڈ فورسز کے دستے شامل ہوئے۔ بوائز اسکاؤٹ اور گرلز گائیڈ کے دستے نے بھی مشترکہ پریڈ میں حصہ لیا جب کہ پولیس سروس کی نمائندگی اسلام آباد پولیس کے دستے نے کی۔

پاک فضائیہ کے سربراہ ایئر چیف مارشل مجاہد انور خان نے ایف 16 پر سلامی پیش کی جب کہ جے ایف 17 تھنڈر طیاروں نے فلائی پاسٹ کیا اور فضائی کرتب بھی دکھائے، پاک فوج کے ہیلی کاپٹرز فلائی پاسٹ کرتے ہوئے سلامی کے چبوترے کے اوپر سے گذرے اور کمانڈوز نے پیرا شوٹ کے ذریعے فضا سے زمین تک آنے کا مظاہرہ بھی کیا۔

اسپیشل سروسز گروپ، کوئن آف بیٹل فیلڈ انفنٹری، خواتین افسروں اور نرسنگ کور کے دستے نے بھی مشترکہ پریڈ میں معزز مہمانوں کو سلامی پیش کی۔

تقریب میں پنجاب، سندھ، خیبرپختونخوا، بلوچستان، آزاد کشمیر اور گلگت بلتستان کے ثقافتی فلوٹس بھی برآمد ہوئے جو سلامی کے چبوترے سے ہوتے ہوئے آگے بڑھے۔

صدر مملکت ممنون حسین کو پاک فوج کے چاق و چوبند دستوں نے سلامی پیش کی جس کے بعد انہوں نے تقریب سے خطاب بھی کیا۔

صدر مملکت نے اپنے خطاب میں کہا کہ ہماری تاریخ میں 23 مارچ جیسا کوئی دن نہیں، اس روز فیصلہ ہوا تھا کہ غاصبانہ طاقتوں کو شکست دے کر اپنی قسمت کا فیصلہ خود کریں گے، ہم اس خواب کو حقیقت کا رنگ دینے والوں کو سلام پیش کرتے ہیں۔

صدر ممنون حسین نے کہا کہ گزشتہ تین دہائیوں کے دوران خطے میں ہونے والی تبدیلیوں اور جنگ و جدل نے خطے کا استحکام متاثر کیا جس کی وجہ سے پاکستان بھی متاثر ہوا لیکن پاک فوج نے آپریشن ضرب عضب اور ردالفساد کے ذریعے اس چینلج کا بھرپور مقابلہ کیا۔

صدر پاکستان نے کہا کہ لازوال قربانیوں کے نتیجے میں ملک میں امن بحال ہوچکا ہے، کامیابی کے اس سلسلے کو برقرار رکھنا ضروری ہے تاکہ دہشتگردی کی عفریت پھر سر نہ اٹھاسکے۔
اس سے قبل دن کے آغاز پر وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں 31 اور صوبوں میں 21، 21 توپوں کی سلامی دی گئی۔

لاہور میں مزار اقبال پر گارڈز کی تبدیلی کی پروقار تقریب کا انعقاد بھی کیا گیا اور پاک فضائیہ کے دستے نے مزار پر گارڈز کے فرائض سنبھال لیے۔

سیکیورٹی مقاصد کے تحت اسلام آباد میں موبائل فون سروس جزوی طور پر معطل رہی۔

یوم پاکستان کے سلسلے میں ایوان صدر میں بھی خصوصی تقریب ہوگی جس میں مختلف شعبوں میں نمایاں کارکردگی کا مظاہرہ کرنے والوں کو ایوارڈ سے نوازا جائے گا۔

یاد رہے کہ 23 مارچ 1940 کو لاہور میں قرارداد مقاصد کے ذریعے علیحدہ وطن پاکستان کا مطالبہ کیا گیا تھا۔

یوم پاکستان کے حوالے سے صوبائی دارالحکومتوں میں بھی خصوصی تقاریب کا انعقاد کیا گیا۔

سندھ

یوم پاکستان کے موقع پر گورنر سندھ محمد زبیر، وزیراعلیٰ سید مراد علی شاہ، تینوں مسلح افواج کے نمائندوں اور آئی جی سندھ اے ڈی خواجہ سمیت دیگر حکومتی عہدیداروں نے مزار قائد پر حاضری دی اور فاتحہ خوانی کی۔

رینجرز ہیڈکوارٹرز میں یوم پاکستان کے سلسلے میں پروقار تقریب منعقد ہوئی جس کے دوران ڈی جی رینجرز سندھ میجر جنرل محمد سعید نے مقام شہدا پر چادر چڑھائی اور شہدا کے درجات کی بلندی کے لئے دعا بھی کی گئی۔

حیدرآباد میں یوم پاکستان کے موقع پر پولیس ہیڈ کواٹرز میں تقریب کا اہتمام کیا گیا، جہاں مہمان خصوصی ڈی آئی جی حیدرآباد جاوید عالم اوڈھو نے خطاب کیا۔

خیبرپختونخوا

ہنزہ میں یوم پاکستان کی مرکزی تقریب کا انعقاد ڈسٹرک ہیڈ کواٹرز علی آباد میں کیا گیا، جہاں ڈپٹی کمشنر علی اصغر نے پرچم کشائی کی۔

سوات کے مختلف مقامات پر یوم پاکستان کی تقریبات کا انعقاد ہوا جب کہ اس سلسلے میں بڑی تقریب سیدو شریف میں منعقد ہوئی۔

ڈیرہ اسماعیل خان میں دریائے سندھ کے کنارے پر پاک فوج کے زیر اہتمام یوم پاکستان کی تقریب کا انعقاد کیا گیا جس میں ملی نغمے، بچوں کے تقریری مقابلے اور ٹیبلوز پیش کیے گئے، تقریب میں پاک فوج اور پولیس شہداء کے اہل خانہ نے خصوصی شرکت کی۔

بلوچستان

کوئٹہ میں یوم پاکستان کی مناسبت سے سیکیورٹی ہائی الرٹ ہے، شہر میں 5 ہزار سے زائد پولیس اہلکار تعینات ہیں جبکہ فرنٹئیر کور کے حکام بھی سیکیورٹی کی ڈیوٹی سر انجام دے رہے ہیں۔

ڈیرہ بگٹی میں یوم پاکستان کے سلسلے میں ڈی سی آفس میں پرچم کشائی کی تقریب منعقد ہوئی جبکہ سوئی میں پاکستان ہاؤس سے ایف سی قلعہ تک ریلی نکالی گئی۔

چمن میں مرکزی تقریب پریس کلب چوک پر ہوئی جس میں سیکٹر کمانڈر نارتھ برگیڈیئر ندیم سہیل، کمانڈنٹ کرنل عثمان اور ڈی سی سیف کھیتران نے پرچم کشائی کی جب کہ کمانڈر نارتھ سیکٹر برگیڈئیر ندیم سہیل کی قیادت میں یوم پاکستان ریلی بھی نکالی گئی۔

خضدار کے غوث بخش بزنجو اسٹیڈیم میں منعقدہ یوم پاکستان کی تقریب میں پرچم کشائی کی تقریب کا انعقاد کیا گیا، جس میں کمشنر قلات محمد ہاشم غلزئی نے پرچم کشائی کی جب کہ تقریب میں اعلیٰ سول و فوجی حکام، قبائلی عمائدین اور شہریوں کی بڑی تعداد نے شرکت کی، تقریب میں پاک فوج کی جانب سے جنگی سازو سامان کی نمائش بھی کی گئی۔

خاران میں ایف سی پبلک اسکول اینڈ کالج میں یوم پاکستان کی پروقار تقریب ہوئی جس میں سرکاری افسران، علاقائی عمائدین اور اساتذہ و طلبا کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔

پنجاب

ڈیرہ غازی خان میں یوم پاکستان کی مرکزی تقریب جامعہ ہائی اسکول میں منعقد ہوئی جس میں ڈپٹی کمشنر مہر جنید ابراہیم نے پرچم کشائی کی، تقریب میں سیاسی، سماجی شخصیات اور طلبا و طالبات نے شرکت کی۔

سرگودھا میں یوم پاکستان کے سلسلے میں پاکستان زندہ باد ریلی نکالی گئی جس کے شرکاء نے شہر کے مختلف بازاروں کا چکر لگایا۔

مظفر گڑھ میں یوم پاکستان کے موقع پر ریسکیو اسٹیشن میں تقریب منعقد ہوئی جس میں ڈسٹرکٹ ایمرجنسی آفیسر ڈاکٹر ارشاد نے پرچم کشائی کی۔

راجن پور کے ڈپٹی کمشنر آفس میں یوم پاکستان کی تقریب ہوئی جہاں ڈپٹی کمشنر اشفاق احمد کی جانب سے پرچم کشائی کی گئی، تقریب میں ضلعی انتظامیہ، پولیس اور مختلف اسکولوں کے بچوں نے شرکت کی۔

گلگت بلتستان

بلتستان ڈویژن کے چاروں اضلاع میں بھی یوم پاکستان کی تقریبات کا انعقاد کیا گیا اور تمام ضلعی ہیڈکواٹرز میں پرچم کشائی کی تقریبات ہوئیں جب کہ میونسپل اسٹیڈیم میں پاک فوج کی جانب سے دفاعی ساز وسامان کی نمائش کا انعقاد بھی کیا گیا۔

آزاد کشمیر

آزاد کشمیر میں بھی یوم پاکستان کی تقریبات کا انعقاد کیا گیا اور مظفرآباد میں آزادی چوک سے گھڑی پن چوک تک ریلی بھی نکالی گئی۔

Leave your vote

0 points
Upvote Downvote

Total votes: 0

Upvotes: 0

Upvotes percentage: 0.000000%

Downvotes: 0

Downvotes percentage: 0.000000%

اپنا تبصرہ بھیجیں