ملتان دھماکہ. سیکیورٹی حکام کے موقف میں تضاد

سی پی او ملتان اظہر اکرم اور سی ٹی ڈی حکام کے موقف میں تضاد

ملتان(پی ایف پی) ملتان دھماکہ،ابن سینا میڈیکل کالج و ہسپتال کے سامنے بستی راجہ پور جہانگیرآباد میں ہونے والے بارود کے دھماکہ کے حوالے سے سی پی او ملتان اظہر اکرم اور سی ٹی ڈی حکام کے موقف میں تضاد پایا جاتا ہے۔

اصل حقائق اور معاملات کیا ہیں نہ پولیس ذرائع اس دھماکہ کے حوالے سے حقائق میڈیا کو بتانا چاہتے ہیں اور نہ ہی سی ٹی ڈی حکام. سی پی او ملتان مسٹر اظہراکرم نے اپنے موقف میں بتایا ہے کہ جس مکان میں دھماکہ ہوا ہے اور سی ٹی ڈی کے دو اہلکار زخمی ہوئے ہیں وہاں مال مقدمہ رکھا تھا جو کہ یہ اہلکار تھانے لانا چاہتے تھے

مال مقدمہ ہمیشہ تھانہ کے مال خانے میں جمع ہوتا ہے , اس دھماکہ میں زخمی ہونے والے سی ٹی ڈی ملتان کے ملازمین عصمت اللہ اور خالد تھانہ سیتل ماڑی کے علاقہ کوٹ ربنواز سے آرہے تھے کہ انہیں سڑک کے کنار ے پڑے شاپر کواٹھایا. دیکھا تو اس میں ایک چھوٹی ڈیوائس نظر آئی جس کی اطلاع انہوں نے سی ٹی ڈی حکام کو دی اور دونوں ملازمین شاپر سمیت ڈیوائس لے کر ابن سین کالج و ہسپتال کے سامنے بستی راجہ پور جہانگیرآبادگھر پہنچے. ہمارے اور سول ڈیفنس حکام اور دیگر پولیس اور دیگر اداروخ کے پہنچنے سے قبل ہی یہ ڈیوائس اچانک پھٹ گئی

مال مقدمہ ہمیشہ تھانہ کے مال خانے میں جمع ہوتا ہے جبکہ کہ اس دھماکہ میں زخمی ہونے والے سی ٹی ڈی ملتان کے ملازمین عصمت اللہ اور خالد تھانہ سیتل ماڑی کے علاقہ کوٹ ربنواز سے آرہے تھے

دونوں ملازمین شدید زخمی ہو گئے جنہیں نشتر ہسپتال ملتان داخل کر گیا، جہاں انک حالت بہتر ہے۔ سی ٹی ڈی ملتان کے ذرائع نے ایک سوال کے جواب میں بتایا کہ یہ کہنا غلط ہے کہ وہاں کوئی خود کش جیکٹ دھماکے سے پھٹی ہے ۔انہوں نے مزید بتایا کہ نامعلوم ملزمان کے خلاف تھانہ سی ٹی ڈی ملتان میں 3\4 ایکسپلوسو ایکٹ ۔324 ت پ اور 7ATA کے تحت مقدمہ درج کر کے نامعلوم دہشتگردوں کے بارے میں تفتیش شروع کر دی گئی ہے ۔

سی ٹی ڈی ذرائع نے ایک اور سوال کے جواب میں مزید بتایا کہ یہ ڈیوائس ایک پا¿ وزنی تھی ۔اس طرح ملتان پولیس کے اعلی حکام اور سی ٹی ڈی حکام کے موقف میڈ تضاد پایا جاتا ہے جس نے سارے معاملے کو مشکوک کرار دے دیا ہے۔

علاقہ جہانگیرآباد اور ملتان کے عوام کا مطالبہ ہے کہ وزیر اعلی پنجاب ہائی کورٹ کے کسی معزز جج کی نگرانی میں اس دھماکے کی تحقیقات کرائیں اور اصل حقائق سے عوام اور میڈیا کو آگاہ کریں ۔

Leave your vote

0 points
Upvote Downvote

Total votes: 0

Upvotes: 0

Upvotes percentage: 0.000000%

Downvotes: 0

Downvotes percentage: 0.000000%

اپنا تبصرہ بھیجیں