مریض نے شیخ زیدہسپتال کی دوسری منزل سے کود کر زندگی کا خاتمہ کر لیا

لاہور (پی ایف پی) زیرعلاج مریض نے شیخ زیدہسپتال کی دوسری منزل سے کود کر زندگی کا خاتمہ کر لیا۔ لواحقین نے ڈاکٹرعامر لطیف کو عثمان کی موت کا ذمہ دار قرار دیدیا،پو لیس نے لا ش کو پو سٹما ر ٹم کیلئے بجھو ا کر تفتیش شر وع کر دی ۔ تفصیلا ت کے مطا بق ڈی ایم ایس کا کہنا ہے کہ کسی نے لواحقین سے بدتمیزی نہیں کی، مریض گھر جانے کی ضد کر رہا تھا۔
شیخ زید ہسپتال میں زیر علاج 23 سالہ محمد عثمان نے ہسپتال کی دوسری منزل سے کود کر خود کشی کر لی۔ جگر کے عارضے میں مبتلا عثمان کے چچا محمد دین نے بتایا کہ ڈاکٹرعامرلطیف چیک اپ کیلئے کمرے میں آئے اور ان سے بدتمیزی کی جس کے بعد ڈاکٹروں نے اسے کمرے سے باہر نکال دیا۔چیک اپ کے تین سے چارمنٹ کے بعد عثمان نے خود کشی کر لی۔ مریض کے چچا نے عثمان کی موت کا ذمہ دار ڈاکٹرعامر لطیف کو ٹھہرایا ہے۔
محمدعثمان کے کزن اعظم کا کہنا ہے کہ ڈاکٹروں نے بیماری دیکھتے ہی مریض کوجواب دے دیا تھاجس کی مریض کو پریشانی تھی۔ ڈی ایم ایس ڈاکٹراشترعلی زیدی نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ سینئر ڈاکٹرز کے راونڈ کے وقت مریضوں کے لواحقین کو باہر نکال دیا جاتا ہے،کسی نے بھی عثمان کے لواحقین سے بدتمیزی نہیں کی جبکہ مریض کو جواب بھی نہیں دیا گیا تھا۔انہوں نے بتایا کہ محمدعثمان کی حالت بہتر ہو رہی تھی البتہ وہ گزشتہ دو روز سے گھرجانے کی ضد کر رہا تھا۔پو لیس نے لا ش کو مر دہ خا نہ بجھو ا کر تفتیش شر وع کر دی۔

Leave your vote

0 points
Upvote Downvote

Total votes: 0

Upvotes: 0

Upvotes percentage: 0.000000%

Downvotes: 0

Downvotes percentage: 0.000000%

اپنا تبصرہ بھیجیں