قومی اسمبلی ذیلی کمیٹی انسانی حقوق کا صوبوں کی جانب سے گزشتہ تین سال سے لیبر پالیسی نہ بنانے کا نوٹس

ادارہ برائے تحفظ ماحولیات، کیپیٹل ڈولپمنٹ ورکنگ پارٹی اور پراونشنل ڈولپمنٹ ورکنگ باڈی کے ممبران یقینی بنائیں نئے لگائے جانیوالے منصوبوں سے ماحولیات کو نقصان نہ ہو،ہدایت

اسلام آباد ( پی ایف پی ) قومی اسمبلی کی ذیلی کمیٹی برائے انسانی حقوق نے صوبوں کی جانب سے گزشتہ تین سال سے لیبر پالیسی نہ بنانے کا نوٹس لیتے ہوئے ہدایت کی ہے کہ ادارہ برائے تحفظ ماحولیات، کیپیٹل ڈولپمنٹ ورکنگ پارٹی اور پراونشنل ڈولپمنٹ ورکنگ باڈی کے ممبران اس بات کو یقینی بنائیں کہ نئے لگائے جانے والے منصوبوں سے ماحولیات کو نقصان نہ ہو۔ ذیلی کمیٹی کے کنوینیئررکن اسمبلی صاحبزادہ محمد یعقوب نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ ماحولیات کے تحفظ کیلئے بنائے جائے والے اداروں کو سہولیات فراہم کرے تاکہ عوام کیلئے بہتر ی ہوسکے۔کمیٹی کے ارکان نے وفاقی دارالحکومت اور پنجاب میں لیبر پالیسی بنانے کے بعد ان پر عمل درآمد کیا جارہا ہے۔صوبہ پنجاب سے سرکاری اداروں نے کمیٹی کو بتایا کہ پنجاب کے اندر انڈسٹریل زون بنائے گئے ہیں جن میں تقریبا 6700انڈسٹریز ہیں جن کو ہدایت کی گئی ہے کہ ملحقہ آبادیوں کے رہائشیوں کی صحت کا خیال رکھا جائے۔پولیتھین بیگ کے استعمال اور اسکی پیداوار کو بند کرنے کے بارے میں کمیٹی کو بتایا گیا کہ ٹیکسٹائل کے بعد یہ دوسری بڑی انڈسٹری ہے، لہذا اسے بند کرنے سے بہت سے افراد بے روزگار ہوجائینگے ، البتہ اسکے لئے احتیاطی تدابیر کی ہدایت جاری کی گئی ہے۔کمیٹی نے متعلقہ اداروں کو ہدایت کی کہ زرعی استعمال کیلئے پانی کو آلودہ نہ کیا جائے تاکہ ملکی زراعت کو نقصان نہ پہنچے۔

Leave your vote

0 points
Upvote Downvote

Total votes: 0

Upvotes: 0

Upvotes percentage: 0.000000%

Downvotes: 0

Downvotes percentage: 0.000000%

اپنا تبصرہ بھیجیں