عمران خان صاحب کہتے ہیں…زریاب درویش

عمران خان صاحب کہتے ہیں کہ حکومت کرپٹ ہے یہ کوئی نئی بات نہیں سب ہی کہتے ہیں کہ کرپٹ ہے لیکن عمران خان کبھی یہ نہیں کہتا کہ لوگوں تم کرپشن مت کرو تم دھوکہ مت دو تم جھوٹ مت بولو تم ملاوٹ مت کرو ، عمران خان ہمیشہ تحریک کی بات کرے گا احتجاج کی بات کرے گا لوگوں کو اکسانے کی بات کرے گا جیسا سب کرتے آۓ ہیں اس لۓ اگر کوئی یہ کہے کہ عمران خان باقی سب سے اچھا ہے تو وہ بے وقوف ہے لٰیڈر وہ ہوتا ہے جو آپ کی تربیت کرے آپ کو ایک اچھا انسان بناۓ کیونکہ اچھے انسان سے ہی اچھا معاشرہ بنتا ہے کسی کے خلاف بھڑکانے سے کبھی معاشرہ اچھا نہیں بنتا ماں باپ کرپٹ ہوں برے ہوں تب بھی اللہ نے کہیں یہ نہیں کہا کہ ان کے ساتھ بدتمیزی سے پیش آؤ کیونکہ یہ ادب کے خلاف ہے جب انسان کے دل میں ماں باپ کی عزت نہیں رہے گی تو گھر کا نظام ہی خراب ہو جاۓ گا اسی طرح اللہ نے حکمرانوں کو برا کہنے سے روکا ہے جب لیڈر کو ہی بات کرنے کی تمیز نہیں ہوگی تو اس کے حمایتی بھی بد تمیز ہی ہوں گے اگر کینسر کا ہسپتال بنانے سے انسان اچھا بن جاتا تو عمران سے کئی زیادہ اچھے تو وہ ہوتے جنہوں نے مساجد تعمیر کروائیں جیسے ملک ریاض ہے اگر اس نے مسجد بنائی ہے تو اس کأمطلب یہ نہیں کہ وہ اچھا ہے ایک نیک کام کرنے سے انسان اچھا نہیں بن جاتا اچھا وہ ہی ہوتا ہے جو زندگی بھر اچھے کام ہی کرتا ہے ہم لوگ چونکہ بے وقوف ہیں اس لۓ صرف کرپشن کو ہی دیکھتے ہیں اچھا لیڈر وہ ہی ہوتا ہے جو نیک اور ایماندار ہو دیندار ہو جو لوگوں کی اصلاح کرے ان کو اچھا بننے کی تربیت دے اس لۓ عمران خان ہو یا نواز شریف یا زرداری کسی میں کوئی فرق نہیں یہ سب لوگوں کو بے وقوف بنا کر اپنا مطلب نکالتے ہیں. ہمارا المیہ یہ ہے کہ ہم کو اسلام تو پسند ہے لیکن لیڈر لبرل ہی چاہیۓ ہمیں یہ تو پتہ ہے کہ عورت کیلۓ پردہ ضروری ہے لیکن اپنے لیڈروں کے جلسے میں بے پردگی کو کبھی برا نہیں کہیں گے ہمیں یہ معلوم ہے کہ ناچ گانا اسلام میں منع ہے لیکن اپنے جلسوں میں ناچ گانے کو جسٹیفائی کریں گے ہمیں سب کچھ پتا ہے لیکن ہم اسی کو غلط کہیں گے جو ہمارا مخالف کرے گا ہم چاہے جتنے بھی نافرمان ہوں اپنی غلطی کبھی تسلیم نہیں کریں گے اس کو بھی منافقت کہتے ہیں اور ہم پرلے درجے کے منافق اور گھٹیا لوگ ہیں ہم خود اچھا بننا نہیں چاہتے لیکن یہ چاہتے ہیں کہ معاشرہ اچھا ہو جاۓ سب کے سب لیڈر برے ہیں کیونکہ ان میں اللہ کا خوف نہیں اور انٔکے چاہنے والے بھی برے ہیں کیونکہ ان میں بھی اللہ کا خوف نہیں جب تک ہم خود نہیں سدھریں گے معاشرہ کبھی نہیں بدلے گا

Leave your vote

0 points
Upvote Downvote

Total votes: 0

Upvotes: 0

Upvotes percentage: 0.000000%

Downvotes: 0

Downvotes percentage: 0.000000%

اپنا تبصرہ بھیجیں