شازیہ اکبر کو جلد نا اہلی کا سامنا

مظفرآباد(پی ایف پی)آزادکشمیر قانون ساز اسمبلی کی مخصوص نشستوں پر پاکستان پیپلز پارٹی نے اپنی امیدوارہ شازیہ اکبر کو کامیاب کرا دیا، مالی بدعنوانی اور اختیارات کے نا جائز استعمال پر شازیہ اکبر کو جلد نا اہلی کا سامنا کرنا پڑسکتا ہے۔ غلام صادق، چوہدری لطیف اکبر اور شازیہ اکبر نے کشمیر کونسل اور قانون ساز اسمبلی سے ڈبل تنخواہ لی تھی ، ہائیکورٹ نے غلام صادق کو ناہل بھی قراردے دیا تھا جبکہ شازیہ اکبر کی نا اہلی کیلئے پیپلز پارٹی کی ہی رہنماءنبیلہ ایوب نے ہائیکورٹ میں پٹیشن دائیر کر رکھی ہے۔ تفصیلات کے مطابق پیپلز پارٹی نے مخصوص نشست کیلئے سابق ممبر اسمبلی شازیہ اکبرکو پولنگ سے منتخب تو کرا دیا لیکن شازیہ اکبر اب بھنور میں پھنس چکی ہیں۔پیپلز پارٹی کی ہی مرکزی رہنماءوسابق چیئرپرسن کشمیر کلچرل اکیڈمی نبیلہ ایوب نے ہائیکورٹ میں شازیہ اکبر کی نا اہلی کیلئے گزشتہ روز پٹیشن دائیر کی تھی۔آزادکشمیر ہائیکورٹ نے نبیلہ ایوب کی پٹیشن سماعت کیلئے منظور کرتے ہوئے 2 اگست کو فریقین کو طلب کر رکھا ہے۔ نبیلہ ایوب نے خاتون وکیل راحت فاروق ایڈووکیٹ کے ذریعے پٹیشن میں موقف اختیار کیا تھا کہ سابق ممبر اسمبلی شازیہ اکبر نے وفاق میں پیپلز پارٹی کے دور حکومت میں دھوکہ دہی کے تحت کشمیر کونسل اور آزادکشمیر اسمبلی سے 31 ماہ تک ڈبل تنخواہ حاصل کی ، لہذ یہ صادق اور امین نہیں رہیں اس لیے انہیں ناہل قراردیا جائے۔اس سے قبل پیپلز پارٹی حکومت کے اسپیکر اسمبلی سردار غلام صادق کی اہلیت بھی ان کے حلقے سے مدمقابل امیدوار خان بہادر خان نے چیلنج کی تھی جسے آزادکشمیر ہائی کورٹ نے سماعت کرنے کے بعد غلام صادق کو نا اہل قراردیا تھا تاہم سردار غلام صادق نے آزادکشمیر سپریم کورٹ سے سٹے آرڈر حاصل کرتے ہوئے الیکشن میں حصہ لیا تھا جس میں وہ مسلم لیگ کے امیدوار سے ہار گئے تھے۔

Leave your vote

0 points
Upvote Downvote

Total votes: 0

Upvotes: 0

Upvotes percentage: 0.000000%

Downvotes: 0

Downvotes percentage: 0.000000%

اپنا تبصرہ بھیجیں