سیاستدان آپس میں لڑرہے ہیں اورمودی مسکرا رہا ہے، بلاول

چیئرمین پاکستان پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری کا کہنا ہے کہ آج قائد اعظم کے پاکستان کو دہشت گردوں نے خون میں نہلادیا ہے، قائد کو بتانا چاہتا ہوں کہ ملک میں آئین توڑنے والے آزاد ہیں، سیاستدان آپس میں لڑرہے ہیں اورمودی مسکرا رہا ہے۔

کراچی میں سانحہ کارساز کے شہداء کو خراج عقیدت پیش کرنے لئے پیپلز پارٹی کی جانب سے ’سلام شہداء‘ ریلی نکالی گئی جس کی قیادت بلاول بھٹو زرداری نے کی۔

بلاول بھٹو زرداری کے پرجوش خطابات نے جیالوں کا لہو گرمادیا ، پاکستان کھپے کے نعرے خود بھی لگائے اور کارکنوں سے بھی لگوائے، مسلم لیگ ن ، تحریک انصاف اور ایم کیو ایم پر لفظوں کے تیر چلائے اور اعلان کیا کہ بی بی کا بیٹا میدان میں آگیا ہے، تیر کمان سے نکل چکا ہے۔

بلاول بھٹو زرداری کا کہنا تھا کہ بچکانہ اپوزیشن سے نواز شریف کو مضبوط کیا جارہا ہے، شیر کے شکار کا ٹھیکا ایک کھلاڑی کو دے دیا گیا مگر جیالے مایوس نہ ہوں، آپ ساتھ دیں گے تو پورے پاکستان کو بدل دیں گے، آج وہ پتنگ کٹ گئی جو سندھ کی تقسیم چاہتی تھی ۔

بلاول کا کہنا تھا کہ جہاں ظلم کے خلاف جنگ ہو گی وہاں کربلا کا میدان سجے گا، ہم زبان اور برادری کی سیاست سے آزادی چاہتے ہیں،سانحہ کارساز پاکستان کی تاریخ میں دہشت گردی کا بڑا واقعہ ہے،18اکتوبر 2007 کو حملہ عوام کی امیدوں پر کیا گیا،آج ہم شہداکو خراج عقیدت پیش کر رہے ہیں۔

بلاول بھٹو اپنی والدہ بینظیر بھٹو کی شہادت کا ذکر کرتے ہوئے آبدیدہ ہوگئے۔انہوں نے کہا کہ بینظیر بھٹو کراچی کے عوام کیلئے امید کا چراغ بن کر آئی تھیں، بی بی کو شہید کرکے وقت کے یزید سمجھتے تھےانہیں للکارنے والا کوئی نہیں ہوگا،بی بی کا بیٹا زندہ ہے، بی بی کا آصف زندہ ہے۔

Leave your vote

0 points
Upvote Downvote

Total votes: 0

Upvotes: 0

Upvotes percentage: 0.000000%

Downvotes: 0

Downvotes percentage: 0.000000%

اپنا تبصرہ بھیجیں