سویلین ایمپلائز ہاؤسنگ سوسائٹی میں اربوں کی کرپشن

سواں گارڈن سوسائٹی کی موجودہ باڈی کے صدر اور جنرل سیکرٹری نے ایک دوسرے پر الزامات کی بوچھاڑ کرتے ہوئے رجسٹرار ہاؤسنگ سوسائٹیز کو درخواستیں دیدی ہیں
رجسٹرار نے موجودہ باڈی کو معطل کر دیا،میگا کرپشن کے خلاف تاحال ضلعی انتظامیہ نے کوئی دیگر قانونی راستہ اپنایا اور نہ ہی مقدمہ درج کرایا ،ذرائع

اسلام آباد(پی ایف پی)سویلین ایمپلائز ہاؤسنگ سوسائٹی میں اربوں روپے کی کرپشن نے ایک بار پھر سر اٹھا لیا ہے ،سواں گارڈن سوسائٹی کی موجودہ باڈی کے صدر اور جنرل سیکرٹری نے ایک دوسرے پر الزامات کی بوچھاڑ کرتے ہوئے رجسٹرار ہاؤسنگ سوسائٹیز کو درخواستیں دیدی ہیں ۔دستاویزات کے مطابق سواں گارڈن ہاؤسنگ سوسائٹی کے صدر انصر گوندل نے رجسٹرار کو درخواست دی ہے کہ سیکرٹری یاسر مہدی نے 10پلاٹ ایسے الاٹ کئے ہیں جن میں کروڑوں روپے کرپشن کی گئی جبکہ دوسری جانب سیکرٹری سوسائٹی نے بھی جواباً انصر گوندل کی ڈیڑھ ارب روپے کی کرپشن بے نقاب کرتے ہوئے درخواست رجسٹرار دفتر جمع کروا دی ۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ درجنوں عام شہری روزمرہ کی بنیاد پر نہ صرف مظاہرے کرتے ہیں بلکہ لوٹی گئی اپنی رقم کی واپسی کے تقاضوں سمیت ملزمان کے خلاف قانونی کارروائی کا بھی مطالبہ کر رہے ہیں ۔ذرائع کا کہنا ہے کہ انصر گوندل کے خلاف سیکرٹری یاسر مہدی نے کم از کم ڈیڑھ ارب روپے کی کرپشن کے ثبوت رجسٹر ار آفس جمع کروائے ہیں جس کے پیش نظرسرکل رجسٹرار نے فوری طور پر ایکشن لیتے ہوئے موجودہ باڈی کو معطل کر دیا تھا لیکن میگا کرپشن کے خلاف تاحال ضلعی انتظامیہ نے کوئی دیگر قانونی راستہ نہیں اپنایا ہے اور نہ ہی کہیں مقدمہ درج کرایا گیا ہے ۔ذرائع کا کہنا ہے کہ سوسائٹی صدر نے بھی سیکرٹری کے خلاف ایک باضابطہ درخواست دے رکھی ہے اس میں بھی متعد د الاٹمنٹ لیٹرز کی کاپی لگائی گئی ہے ن جعلی لیٹرز کے ذریعہ بھی کروڑوں روپے کی کرپشن کا انکشاف ہوا ہے ۔سوسائٹی ذرائع کا کہنا ہے کہ ایف آئی اے ہو یا نیب دونوں معتبر ادارے بااثر افراد پر ہاتھ ڈالنے کو تیا ر نظر نہیں آتے ہیں باوجود اس کے کہ متعدد درخواستیں بھی عام شہریوں کی جانب سے دی گئیں ۔رجسٹرار سرکل کے ذرائع کا کہنا ہے کہ بہت جلد سرکل رجسٹرار دفتر سے ہاؤسنگ سوسائٹی کے مبینہ کرپٹ افراد کے خلاف مقدمہ درج کروا کر متاثرین کو انصاف دلایا جائے گا۔سوسائٹی ذرائع نے بتایا کہ سویلن ایمپلائز ہاؤسنگ سوسائٹی سی ڈی اے سے منظور شدہ نقشہ کے مطابق بھی نہیں ہے جب شہریوں کو پلاٹ دیے جارہے تھے اس نقشہ میں قبرستان ،سکولز،پارک اور مساجد تھیں جبکہ موجودہ نقشہ میں تمام تر آراضی پر پلاٹ بنا کر اربوں روپے ڈکار لیے گئے ہیں اور اس حوالے سے ایف آئی اے نے فرضی کارروائی کرکے ملزمان کو نیب سے بچا لیا اور اربو ں روپے کی کرپشن سے آج تک دھول نہیں ہٹائی جا سکی ہے ۔ذرائع کا یہ بھی کہنا ہے کہ موجودہ انتظامیہ نے بھی میگا کرپشن کر کے درجنوں شہریوں کو اجاڑ کر رکھ دیا ہے ،مگر انکے خلاف بھی کہیں کسی فورم پر کارروائی ہوتی نظر نہیں آتی ہے

Leave your vote

0 points
Upvote Downvote

Total votes: 0

Upvotes: 0

Upvotes percentage: 0.000000%

Downvotes: 0

Downvotes percentage: 0.000000%

اپنا تبصرہ بھیجیں