سمجھوتہ ایکسپریس واہگہ ریلوے سٹیشن سے انڈیا کی طرف اپنے معمول کے اوقات کے مطابق روانہ ہو گی،شیخ رشید احمد

جب تک کشمیر کا مسئلہ زندہ ہے پاکستان اور بھارت میں امن نہیں ہوسکتا۔ جنگ جتنی ٹل جائے بہتر ہےجب تک کشمیر کا مسئلہ زندہ ہے پاکستان اور بھارت میں امن نہیں ہوسکتا۔ جنگ جتنی ٹل جائے بہتر ہے
پاکستان سے تھر ایکسپریس کھوکھراپار سے مونا باؤکے لئے 600مسافروں کو لے کر انڈیا پہنچ چکی ہے اور انڈیا کی طرف سے بھی ٹرین مونا باؤ سے کھوکھراپار تک پہنچ چکی ہے
دن رات کام کرکے ہم نے پاک فوج کی ضروریات اور ڈیمانڈ کو بھی پورا کیا

لاہور (پی ایف پی)پاکستان سے تھر ایکسپریس کھوکھراپار سے مونا باؤکے لئے 600مسافروں کو لے کر انڈیا پہنچ چکی ہے اور انڈیا کی طرف سے بھی ٹرین مونا باؤ سے کھوکھراپار تک پہنچ چکی ہے ۔
سوموار کے دن سمجھوتہ ایکسپریس بھی واہگہ ریلوے سٹیشن سے انڈیا کی طرف اپنے معمول کے اوقات کے مطابق روانہ ہو گی۔ ریلوے ہیڈ کوارٹر میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے وفاقی وزیر ریلوے شیخ رشید احمد نے کہا کہ فضائی حدود پر پابندی کے بعد ریلوے سے ہنگامی حالات میں 25فیصد زائد مسافروں نے سفر کیا ہے لہٰذا ریلوے نے اس کمی کو بھر پور طریقے سے پورا کیا ہے۔ اس پر ریلوے کے مزدور ، سٹاف اور افسران مبارکباد کے حقدار ہیں۔ دن رات کام کرکے ہم نے پاک فوج کی ضروریات اور ڈیمانڈ کو بھی پورا کیا ۔
ملتان اور دوسری جگہوں پر جہاں بھی ان کو ٹرینوں کی ضرورت تھی پورا کیا جو کہ پاکستان کی تاریخ کا ایک اہم حصہ ہے ۔ پاکستان ریلوے میں ایمرجنسی نافذ کی گئی ہمارے پاس صرف 7دن کا آئل سٹاک موجود تھا ۔ میں وزیر خزانہ اسد عمر اور پٹرولیم منسٹری کا شکر گزار ہوں جنہوں نے پورے مہینے کے لئے 1.2 بلین کا آئل ہمیں اُدھار دیا ہے ۔

ریلوے ٹریک کے حوالے سے بات کرتے ہوئے وفاقی وزیر نے کہا کہ ایم ایل ون کے علاوہ ریلوے کے تمام ٹریکس کے ٹینڈردینے جا رہے ہیں ۔ آج ڈیجیٹل میڈیا پر ٹینڈر دینے کا فیصلہ کیا ہے ایک دو روز میں پرنٹ میڈیا میں بھی آجائے گا۔ ان میں ایم ایل ٹو ، تھری اور فور شامل ہیں ۔ ایم ایل ون پرچائینہ کے ساتھ فائنل سٹیج پر بات چیت چل رہی ہے وزیر اعظم پاکستان عمران خان کے چائینہ جانے سے پہلے اس کا فیصلہ ہو جائے گا کہ اس کا موڈ آف انویسٹمنٹ کیا ہو گا ۔

انہوں نے مزید کہا کہ 9مارچ کو میں وی آئی پی ٹرین کی انسپکشن کروں گا اور 20مارچ کو وزیر اعظم پاکستان عمران خان اس کا افتتاح کریں گے۔ رحمان بابا ایکسپریس غریبوں کی ٹرین کے بعد یہ خوشحال لوگوں کی ٹرین ہو گی جس کے ساتھ بہترین ڈائنگ کار لگا رہے ہیں اس کے بعد سرسید ایکسپریس بھی چلائیں گے ۔ وفاقی وزیر ریلوے شیخ رشید احمد نے کہا کہ رسالپور فیکٹری، مغلپورہ کیرج فیکٹری اور اپنی مشینری کو ماڈرنیزاڈ کرنے کے لئے ترکی اور روس کے ساتھ شراکت داری کرنے جا رہے ہیں۔ ہماری ٹیم کے ابتدائی مذاکرات ان کے ساتھ کامیاب رہے ہیں یہ معاہدہ دونوں ممالک کی حکومتوں کے درمیان ہو گا۔

اپریل میں افغانستان میں عبوری حکومت آنے پر ریلوے کا نقشہ بدل جائے گا اس لئے ہم بھی اپنے مغربی محاذ کی ریلوے کو زبردست ترقی دینے کی خواہش رکھتے ہیں ۔ کوئٹہ ، مستونگ ، جیکب آباد اور تفتان کا بھی بی او ٹی بنیادوں پر ٹینڈر دینے جا رہے ہیں۔ یہ قوم کے لئے بڑی خوشخبری ہے کہ یہ ساری نئی لائنیں سٹینڈرڈ گیج پر ہو ں گی تاکہ سپیڈ کے ساتھ دنیا سے رابطہ ہو سکے ، زائرین کی سکیورٹی کے لئے اس ٹرین کو فوقیت دے رہے ہیں بغیر ٹکٹ سفر کرنے والوں کے خلاف مہم کے دوران ایک ہفتے میں 6کروڑ کا جو جرمانہ وصول کیا تھا وہ کم ہو کر ایک ہفتے میں 60لاکھ پر آگیا ہے جسے ہم 6لاکھ پر لے جائیں گے۔

وفاقی وزیر نے کہا کہ آمدن دینے والے اسٹیشن لاہور اور کراچی وغیرہ کی رینویشن پر ایک روپیہ نہیں لگایا جبکہ نارووال اور اوکاڑہ وغیرہ کے اسٹیشنوں پر کروڑوں خرچ کئے گئے ۔ لاہور، حیدرآباد اور کراچی کو سب سے پہلے رینویٹ کریں گے ۔ جناح ایکسپریس کی افتتاحی تقریب سے پہلے لاہور ریلوے اسٹیشن رینویٹ ہو جائے گااس سلسلے میں ڈی ایس لاہور کو ہدایات جاری کر دی ہیں ۔ایک سوال کے جواب پر شیخ رشید نے کہا کہ رحمان بابا ایکسپریس ، موہنجودوڑوایکسپریس اور سکھر ایکسپریس بڑی تاریخی کامیابی سے چل رہی ہیں ۔ فریٹ ٹرینوں کو ہم آٹھ سے چودہ تک لے گئے ہیں اور انشااللہ بیس تک لے کر جائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے چارماہ میں تین ارب روپے پچھلے سال سے زائد آمدن حاصل کی ہے۔ پورے ملک میں ریل کا جال بچھائیں گے اور اس کاسہرا ریلوے مزدورں اور افسروں کے سر ہے۔ ہمیں فنانسنگ کے مسائل ہیں ہم جو کما رہے ہیں وہ خرچ کر رہے ہیں ۔ پاکستان ریلوے کو وزیر اعظم عمران خان ، وزیر خزانہ اسد عمر اور وزیر پٹرولیم کی پوری سپورٹ حاصل ہے۔

موجودہ ملکی صورتِ حال پر بات کرتے ہوئے وفاقی وزیرریلوے شیخ رشید احمد نے کہا کہ مودی کی بطور حکمران اہمیت ہندوستان جیسے بڑے ملک کے معیار کے مطابق نہیں ہے وہ بنیادی طور پر اسلام دشمن قوت ہے اُس کی اِن حرکات سے آج اُن کی ایکسپورٹ میں کمی ہوئی ہے اور دُنیا میں بھارت کا امیج کم ہوا ہے۔ جب تک کشمیر کا مسئلہ زندہ ہے پاکستان اور بھارت میں امن نہیں ہوسکتا۔ جنگ جتنی ٹل جائے بہتر ہے ہمارے مسائل ہندوستان سے مختلف ہیں 1971 کی جنگ کے بعد پہلی دفعہ اُنہوں نے ہماری ائیرسپیس کو کراس کیا کارگل کی جنگ میں بھی ایسا نہیں ہوا تھا۔

انہوں نے مزید کہا کہ جس دن ہندوستان نے ایڈونچر کرنے کی کوشش کرے گا تو سارے ہندوستان کی چِتاکو جلادیں گے۔ یہ تاریخ ہے بھٹو اور سورن سنگھ ، مشرف اور واجپائی کے درمیان بھی مذاکرات کامیاب نہیں ہوئے تھے کشمیر کی آزادی کشمیر کے نوجوانوں کے دم سے زندہ ہے ۔ کشمیر کی آزادی اور جدوجہد ہماری آزادی اور جدوجہدہے۔پاکستان کا بچہ بچہ کشمیر کی جدوجہد آزادی کے ساتھ ہے۔ میں نے کبھی نہیں سوچاتھا کہ ہندوستان امریکہ کے ہاتھ اور جیب کی گھڑی بنے گا، ہمارا سپہ سالار بڑا دور اندیش ہے اُس کی پوری کوشش تھی کہ امن ہو،جنگ نہ ہوکیونکہ جنگ خارجہ پالیسی کی ناکامی کا نام ہے۔ انڈین میڈیااپنے مقام سے گِرگیاہے جس کے مقابلے میں پاکستانی میڈیا نے ذمہ داری کا ثبوت دیاہے میں ان کوذمہ دارانہ صحافت پر سلام پیش کرتاہوں۔

Leave your vote

0 points
Upvote Downvote

Total votes: 0

Upvotes: 0

Upvotes percentage: 0.000000%

Downvotes: 0

Downvotes percentage: 0.000000%

اپنا تبصرہ بھیجیں