رواں سال افراط زر کی شرح 3فیصد سے کم رہنے کا امکان ہے،رپورٹ

اسلام آباد(پی ایف پی) رواں سال کے دوران افراط زر کی شرح 3فیصد سے کم رہنے کا امکان ہے۔ سال 2016کے دوران پالیسی کی شرح 5.5فیصد سے 5.75فیصد تک رہنے کی توقع ہے۔ ٹاپ ٹین سکیورٹیز کی تجزیاتی رپورٹ کے مطابق سروے نتائج کے مطابق 82 فیصد افراد نے کہا ہے کہ سٹیٹ بینک آف پاکستان سال 2016ے کے دوران 5.75 فیصد کی پالیسی ریٹ میں کوئی تبدیلی نہیں کرے گا جبکہ 25فیصد افراد کاکہنا تھا کہ اس میں مزید 25پی بی ایس کی کمی کی جا سکتی ہے۔
سروے کے دوران مختلف بینکوں ، مالیاتی اداروں ، فنڈ میسنجرز اور اقتصادی امور کے ماہرین سے اس حوالے سے سوال کیا گیا تھا۔ سروے تنائج میں کہاگیاہے کہ ملک میں میکرواکنامک کی مجموعی صورتحال میں بھی بہتری ہوئی ہے۔ تجزیاتی رپورٹ کے مطابق پاکستان میں پالیسی ریٹ کو انتہائی حد تک کم کیاجاچکاہے اوراس میں مزید کمی کے احکامات کم ہیں۔
اس حوالے سے مالیات کے شعبہ سے وابستہ ماہرین کا کہنا تھا کہ سٹیٹ بینک کی جانب سے پالیسی ریٹ میں کی جانیوالی کمی گزشتہ شرح سود تقریباً10فیصد کے ارد گرد رہی ہے جبکہ رپورٹ میں کہاگیاہے کہ سال 2016ئ کے دوران افراط زر کی شرح 3فیصد سے کم رہنے کی بھی توقع ہے جو حکومتی ہدف سے کہیں کم ہے حکومت نے سال 2016کیلئے افراط زر کاہدف 6فیصد مقرر کیا ہے۔

Leave your vote

0 points
Upvote Downvote

Total votes: 0

Upvotes: 0

Upvotes percentage: 0.000000%

Downvotes: 0

Downvotes percentage: 0.000000%

اپنا تبصرہ بھیجیں