casa

حکومت کی عدم توجہی : 1000 میگا واٹ کا کاسا توانائی منصوبہ تاخیر کاشکار

منصوبے کے تحت 1300 میگاواٹ بجلی میں سے 1000 میگاواٹ پاکستان کو ، 300 میگاواٹ بجلی افغانستان نے حاصل کرنا تھی
پاکستان نے بروقت توجہ نہ دی تو منصوبہ مزید ایک سال تک کیلئے تاخیر کا شکار ہوجائے گا ،منصوبے کیلئے نیپرا نے پہلے ہی ٹیرف کا اعلان کیا ہوا ہے، ذرائع

اسلام آباد (پی ایف پی) حکومت کی عدم توجہی کے باعث سینٹرل ایشیاء، ساؤ تھ ایشیاء 1000 میگاواٹ کا کاسا توانائی منصوبہ بھی تاخیر کا شکار ہوگیا۔ منصوبے کے تحت 1300 میگاواٹ بجلی افغانستان اور پاکستان کو ملنا تھی جس میں سے 1000 میگاواٹ پاکستان کو اور 300 میگاواٹ بجلی افغانستان نے حاصل کرنا تھی۔ لیکن افغانستان نے ابھی اپنے حصے کی بجلی پاکستان کو دی تھی کہ جب انہیں ضرورت ہوگی تو وہ اپنے حصے کی بجلی لے لیں گے۔ منصوبے کا باقاعدہ اعلان جولائی 2017 ء میں ہوا تھا اور اس وقت کے وزیراعظم پاکستان نے افتتاحی تقریب میں شمولیت اختیار کی۔ منصوبے کے تحت 1300 میگاواٹ بجلی قومی گرڈ اسٹیشن میں شامل ہونا ہے منصوبے پر کل 1.2 بلین ڈالر لاگت آئے گی منصوبے کے تحت دو کنورٹر اسٹیشن بھی بنائے جائیں گے ایک کنورٹر اسٹیشن تاجکستان جبکہ دوسرا پاکستان میں بنایا جائے گا ذرائع کے مطابق حکومت کی جانب سے منصوبے کے حوالے سے کوئی خاص پیش رفت نظر نہیں آتی۔ جس کی وجہ سے منصوبہ تاخیر کا شکار ہوسکتا ہے منصوبے کے تحت 1300 میگاواٹ فین انرجی پاکستان کو ملنا ہے منصوبے میں پاکستان افغانستان تاجکستان اور کرغستان شامل ہیں ۔ ماہرین نے پہلے ہی منصوبے میں تحفظات کا اظہار کیا ہے اور کہا کہ پاکستان نے جن علاقوں میں ٹرانسمیشن لائن بچھانا ہے وہاں پر ٹرانسمیشن لائن بچھانا کوئی آسان کام نہیں ہے۔ ذرائع کے مطابق اگر پاکستان نے بروقت توجہ نہ دی تو منصوبہ مزید ایک سال تک کیلئے تاخیر اک شکار ہوجائے گا منصوبے کیلئے نیپرا نے پہلے ہی ٹیرف کا اعلان کیا ہوا ہے۔

Leave your vote

0 points
Upvote Downvote

Total votes: 0

Upvotes: 0

Upvotes percentage: 0.000000%

Downvotes: 0

Downvotes percentage: 0.000000%

اپنا تبصرہ بھیجیں