حکومتی اراکین بلوچستان اسمبلی کی نئے بجٹ پر رائے منظر عام پر آگئی ۔۔۔۔آپ بھی جانیئے

اٹھارویں ترمیم ہماری ضرورت ہے اور اس پر من وعن عمل کیا جائے،ڈاکٹرعبدالمالک بلوچ

بلوچستان پاکستان کا نصف حصہ ہے این ایف سی کی تاخیرمیں بلوچستان حکومت ذمہ دارنہیں این ایف سی ایوارڈ جلد از جلد ہونے چاہیے،عبدالرحیم زیارتوال

وزیراعلی بلوچستان اور مخلوط حکومت میں شامل جماعتوں کو بجٹ پیش کرنے پر مبارکباد دیتے ہیں،میر عاصم کر د گیلو، یاسمین لہڑی، مجیب الرحمان محمد حسنی ، عارفہ صدیق

کوئٹہ(پی ایف پی)بلوچستان اسمبلی میں حکومتی اراکین نے بجٹ کو مناسب قراردیتے ہوئے کہا ہے کہ موجودہ بجٹ سے بلوچستان ترقی اور خوشحالی کی راہ پر گامزن ہو جائیگا اٹھارویں ترمیم ہماری ضرورت ہے اور اس پر من وعن عمل کیا جائے این ایف سی ایوارڈ کا انعقاد جلد از جلد ہونی چاہئے چند عناصر 18ویں ترمیم کو نقصان پہنچانا چاہتے ہیں جسکا ہم دفاع کرینگے وزیراعظم سے صوبے کے ترقی کیلئے فنڈز مانگنے پر نہیں ملے وفاقی پی ایس ڈی پی میں ملنے والے40ارب روپے سے بلوچستان کے مسائل حل نہیں ہونگے گوادر اقتصادی راہداری کے مغربی روٹ کی تعمیر وترقی کیلئے ایک روپے کا فنڈ نہیں رکھا گیا ہے سی پیک پروجیکٹ مثبت منصوبہ ہے گوادر کے ریونیو ،نوکریوں میں وہاں کے مقامی لوگوں کے شیئرز ہونے چاہیے ان خیالات کا اظہار سابق وزیراعلیٰ بلوچستان ڈاکٹر عبدالمالک بلوچ نے بجٹ اجلاس پر بحث کر تے ہوئے کیا سابق وزیراعلیٰ ڈاکٹر عبدالمالک بلوچ نے نواب ثنا اللہ زہری اور انکی پوری ٹیم کو متوازن بجٹ پیش کرنے پر مبارکباد دیتا ہوں ہم اس بجٹ کی مکمل حمایت کرتے ہیں-
یورپی یونین کے نعرے جو بلند ہو رہے تھے کل وہ بکھرتا دکھائی دیاہماری خارجہ پالیسی میں بھی ایک بہت بڑا یو ٹرن آیا ہیامریکہ کے ساتھ ہمارے تعلقات مستحکم نہیں ہیں دنیا بھر میں اس وقت معاشی جنگ جاری رہیہم اپنے ملک کی جمہوریت کا دفاع کرینگے،کیونکہ جمہوریت میں ہی ملک کا وقار ہے18ویں ترمیم ہماری ضرورت ہے اور اس پر من و عن عمل درآمد کرینگے سی پیک پروجیکٹ مثبت منصوبہ ہے گوادر کے ریونیو ،نوکریوں میں وہاں کے مقامی لوگوں کے شیئرز ہونے چاہیے چند عناصر 18ویں ترمیم کو نقصان پہنچانا چاہتے ہیں جسکا ہم دفاع کرینگے وفاقی پی ایس ڈی پی میں ملنے والے40ارب روپے سے بلوچستان کے مسائل حل نہیں ہونگے پاکستان کی خارجہ پالیسی اس وقت شدید دبا کا شکار ہے ہمیں متوازی خارجہ پالیسی مرتب کر کے ہمسایہ ممالک کے ساتھ محاز ختم کرنا ہونگے-
پیپلز پارٹی سندھ اور پنجاب میں تقسیم ہو چکی ہے تحریک انصاف اور پیپلز پارٹی مسائل پارلیمنٹ میں حل کریں ،سڑکوں پر نکلنا ملک کے نیک شگون نہیں ملک کا مستقبل جمہوریت میں مضمر ہے جسے ڈی ریل نہیں ہونا چاہیے سکولوں کی بہتری وفاق کا نہیں ہمارا کام ہے موجودہ اتحادی حکومت نے سب کچھ ٹھیک نہیں کیا تاہم بہتری کی جانب پیش قدمی ضرور ی ہے افغان مہاجرین میرے لئے ایک مسئلہ ہیں جسے افہام تفہیم سے حل کرنا ہو گا بحیثیت بلوچ قومی ترجیحات اہمیت کی حامل ہے مگر ہم انسان دوست پارٹی کے کارکن بھی ہیں بلوچ پشتون تاریخی رشتے کو کسی صورت خراب نہیں ہونگے دینگے غربت جہالت ہماری سب سے بڑی دشمن ہے جس کے لئے اپنے وسائل بروئے کار لانے ہونگے پشتونخوا ملی عوامی پارٹی کے پارلیمانی لیڈر صوبائی وزیر تعلیم عبدالرحیم زیارتوال نے وزیراعلی بلوچستان اور کور کمیٹی کو بجٹ پیش کرنے پر داد تحسین پیش کرتے ہیں بلوچستان پاکستان کا نصف حصہ ہے این ایف سی کی تاخیرمیں بلوچستان حکومت ذمہ دارنہیں این ایف سی ایوارڈ جلد از جلد ہونے چاہیے مرکز سے صوبے کی ترقی میں زیادہ مدد کی گزارش کرتے آرہے ہیں وزیراعظم سے صوبے کی ترقی کیلئے فنڈز مانگے پر نہیں ملے گوادر اقتصادی راہداری کے مغربی روٹ کی تعمیر و ترقی کیلئے ایک روپے کا فنڈ نہیں رکھاگیا گوادر کاشغر روٹ کا نیشنل روٹ مغربی ہے ریلوے،فائبر آپٹک اور دیگر منصوبوں کیلئے ایک روپیہ بھی نہیں رکھا گیا-
گوادر اور وہاں کے لوگوں کو ترقی دینا بے حد ضروری ہے رکن صوبائی اسمبلی میر عاصم کر د گیلو، یاسمین لہڑی، مجیب الرحمان محمد حسنی اور عارفہ صدیق نے بجٹ پر اظہار خیال کر تے ہوئے کہا کہ وزیراعلی بلوچستان اور مخلوط حکومت میں شامل جماعتوں کو بجٹ پیش کرنے پر مبارکباد دیتے ہیں بجٹ میں کوئٹہ شہر کی خوبصورتی کیلئے جو فنڈز رکھے گئے ہیں وہ قابل تحسین ہیں ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹرز کیلئے جو فنڈز مختص کئے گئے ہیں ان سے مزید بہتری آئے گی مالی سال2016-17کا متوازن بجٹ پیش کرنے پر وزیراعلی بلوچستان کو مبارکباد دیتی ہوں آبادی کے لحاظ سے فنڈز کی تقسیم کے فارمولے کو ختم کیا جائے فنڈز کی غیر منصفانہ تقسیم سے بلوچستان اور یہاں کے عوام کو نقصان پہنچ رہا ہے دہشت گردوں کو شٹ اپ کال دی جانی چاہے بجٹ میں کچھ تحفظات ہیں ماضی میں میرے حلقے کی کچھ اسکیمات کو نظر انداز کیا گیا۔

Leave your vote

0 points
Upvote Downvote

Total votes: 0

Upvotes: 0

Upvotes percentage: 0.000000%

Downvotes: 0

Downvotes percentage: 0.000000%

اپنا تبصرہ بھیجیں