اسحاق ڈار

جائیداد کی قیمتیں:اسٹیٹ ایجنٹس،بلڈرز اورحکومت کےدرمیان معاملات طے

اسلام آباد: ملک میں جائیداد کی قیمتیں مارکیٹ پرائس کے مطابق کرنے کے معاملے پر اسٹیٹ ایجنٹس، ایسوسی ایشن آف بلڈرز اور حکومت کے درمیان معاملات طے پاگئے۔

وفاقی وزیر خزانہ اسحٰق ڈار نے مذاکراتی کی کامیابی کے بعد اسلام آباد میں فیڈریشن آف پاکستان چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری (ایف پی سی سی آئی) کے صدر عبدالرؤف اور دیگر کے ساتھ پریس کانفرنس کی۔

ان کا کہنا تھا کہ نئے اصول کے تحت ٹرانزیکشنز صاف اور شفاف طریقے سے ہوں گی، جس میں بیچنے والا اور خریدار دونوں مطمئن ہوں گے جبکہ جائیداد کی قیمتوں کا تعین ایف بی آر کرے گا۔

وفاقی وزیر نے کہا کہ ہولڈنگ پیریڈ کو 2 سال سے بڑھا کر 5 سال کردیا گیا ہے، جبکہ جائیداد پر کیپٹل گین ٹیکس ایک سے 2 سال تک ساڑھے 7 فیصد جبکہ 2 سے 3 سال پر 5 فیصد کیپٹل گین ٹیکس لاگو ہوگا’۔

ان کا کہنا تھا کہ پراپرٹی 5 سال کے بجائے 3 سال سے پہلے بیچنے پر ٹیکس لگے گا، غیر منقولہ جائیداد کی فروخت کے تیسرے سال کیپٹل گین ٹیکس 5 فیصد رہے گا۔

انھوں نے کہا کہ ‘جن لوگوں نے یکم جولائی سے پہلے پراپرٹی خریدی ہے اگر وہ 3 سال مکمل ہونے کے بعد بیچیں گے تو وہ اس سے مستثنیٰ ہوں گے اور اس عرصے سے پہلے بیچیں گے تو ان پر ٹیکس کا 5 فیصد پرانا ریٹ لاگو ہوگا’۔

ود ہولڈنگ ٹیکس کی حد کو 30 لاکھ سے بڑھا کر 40 لاکھ کردیا گیا ہے جبکہ 0.4 فی صد ود ہولڈنگ ٹیکس کی مدت 30 جولائی کو ختم ہورہی تھی جس کو اگست کے مہینے میں بھی برقرار رکھا گیا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ جائیداد کی قیمتوں کے تعین کا نوٹی فکیشن بھی ایف بی آر جاری کرے گا۔

مزید پڑھیں: مانیٹری پالیسی:شرح سود 5.75 فیصد پر برقرار
اسحٰق ڈار نے واضح کیا کہ ‘کوئی نئی ایمنسٹی اسکیم متعارف نہیں کرائی تاہم اسٹیک ہولڈرز سے مشاورت کرکے صوبے اس ٹیکس میں کمی کرسکتے ہیں’۔

اس موقع پر صدر ایف پی سی سی آئی نے مطالبات تسلیم کرنے پر حکومت کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ یہ فیصلے حکومت سمیت تمام اسٹیک ہولڈرز سے مشاورت کے بعد کیے گئے ہیں۔

Leave your vote

0 points
Upvote Downvote

Total votes: 0

Upvotes: 0

Upvotes percentage: 0.000000%

Downvotes: 0

Downvotes percentage: 0.000000%

اپنا تبصرہ بھیجیں