بگٹی مہاجرین.واپسی کے وعدے وعدے ہی رہے ،شازین

آج بھی بلوچستان کے مختلف علاقوں میں آپریشن جاری ہے ، نو اب اکبر بگٹی کے قاتل کو اپنے منطقی انجام تک پہنچائیں گے،میڈیا سے بات چیت

کوئٹہ (پی ایف پی ) جمہوری وطن پارٹی کے مرکزی صدر نوابزادہ شازین بگٹی نے کہا ہے کہ بگٹی مہاجرین کی اپنے علاقوں میں واپسی اور بحالی کیلئے وزیراعظم پاکستان سمیت وفاقی اور صوبائی حکومت نے اپنے وعدے پورے نہیں کئے آج بھی بلوچستان کے مختلف علاقوں میں آپریشن جاری ہے ان خیالات کا اظہار انہوں نے بدھ کو بگٹی ہاﺅس کوئٹہ میں صحافیوں کے اعزاز میں دیئے گئے افطار ڈنر کے موقع پر میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کیا اس موقع پر پارٹی کے مرکزی رہنماءسیدصالح آغا ‘ نصیب شاہوانی ‘ عظیم بٹ سمیت دیگر بھی موجود تھے

نوابزادہ شازین بگٹی نے کہا کہ وزیراعظم پاکستان علاج کی غرض سے گزشتہ ایک ماہ سے ملک سے باہر ہیں حکومت اور ملکی امور وزیراعظم کی غیر موجودگی میں کون چلا رہا ہے اس کے حوالے سے انکی پارٹی اور کابینہ بہتر جواب دے سکتی ہے

وزیراعظم کو چاہئے کہ وہ فوری طورپر وطن واپس آئیں اور ملکی امورکو چلائیں بگٹی مہاجرین کی اپنے علاقوں میں واپسی اور بحالی کے حوالے سے وزیراعظم میاں محمد نوازشریف نے بگٹی ہاﺅس کوئٹہ میں وعدہ کیا تھا کہ لیکن ان کے احکامات پر وفاقی اور صوبائی حکومت نے کوئی عملدرآمد نہیں کیا جس کی وجہ سے مہاجرین میں شدید بے چینی پائی جاتی ہے

ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ سابق آمر ریٹائرڈ جنرل مشرف کو مسلم لیگ (ن) کی حکومت نے باہر بھیجا ہے حالانکہ اقتدار میں آنے سے قبل انہوں نے بلند و بانگ دعوے کئے تھے کہ شہید نواب اکبر بگٹی کے قاتل کو اپنے منطقی انجام تک پہنچائیں گے بگٹی مہاجرین کو ان کے علاقے میں واپس لے جاکر بحال کریں گے لیکن اس پر کوئی عملدرآمد نہیں ہوا اور مشرف کو باہر بھیجنے کی تمام تر ذمہ داری مسلم لیگ (ن) پر عائد ہوتی ہے انہوں نے کہا کہ ڈاکٹر عبدالمالک بلوچ کادور حکومت ہو یا موجودہ حکومت کا دونوں میں وہ صلاحیت اور ویل نہیں کہ وہ صوبہ کو لیکر آگے چلیں اور عوام کے مسائل حل کریں کیونکہ صوبہ میں صحت کی سہولیات کے حوالے سے عوام کو دل کے امراض کے علاج معالجے کیلئے کراچی لاہور اور پنجاب کے مختلف علاقوں میں جانا پڑتا ہے

ایک اور سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ اگر 2018ءکے الیکشن میں حقیقی معنوں میں انتخابات ہوئے اور عوام کے ووٹ کے تقدس کا احترام کیا گیا تو ہم الیکشن میں حصہ لیں گے اگر الیکشن کے ذریعے سلیکشن کی گئی تو اس کا حصہ نہیں بنیں گے بلوچستان میں آپریشن کے حوالے سے ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ اس وقت آپریشن کے حوالے سے آوازیں آرہی ہیں لیکن وہ شدت نہیں جو پہلے تھی انہوں نے کہا کہ بڑے افسوس سے کہنا پڑرہا ہے کہ آئی ڈی پیز کو صوبہ سرحد سے ان کے اپنے علاقوں میں واپس بھیجا جارہا ہے لیکن بگٹی مہاجرین آج بھی اپنے ملک اور صوبہ سمیت علاقے میں مہاجرین کی زندگی گزارنے پر مجبور ہیں حکومت سنجیدہ نہیں اور ہمیں بھی اپنے علاقے میں جانے کیلئے حکومت نے کوئی سہولت نہیں دی اہم اپنے علاقے میں گئے اور آئندہ بھی جائیں گے کرپشن کے حوالے سے انہوں نے کہا کہ ہماری جماعت کا واضع موقف ہے کوئی سیاستدان بیوروکریٹ حتیٰ کہ کوئی بھی ملازم کرپشن میں ملوث ہے تو اس کیخلاف بلاتفریق کارروائی کرکے اسے 25 سال سزاءاور اس سمیت اس کے خاندان کو الیکشن میں حصہ لینے کیلئے عمر بھر کیلئے نااہل قرار دیا جائے

Leave your vote

0 points
Upvote Downvote

Total votes: 0

Upvotes: 0

Upvotes percentage: 0.000000%

Downvotes: 0

Downvotes percentage: 0.000000%

اپنا تبصرہ بھیجیں