انگلینڈ ون ڈے کی عالمی نمبر ایک ٹیم بن سکتی ہے،بین اسٹوکس

ڈھاکا(پی ایف پی) انگلش آل راؤنڈر بین اسٹوکس نے کہا ہے کہ اگر انگلینڈ نے ایک روزہ میچوں میں عمدہ کارکردگی کا سلسلہ جاری رکھا تو وہ عالمی نمبر ایک ٹیم بن سکتی ہے۔

انگلینڈ نے اتوار کو چٹاگانگ میں کھیلے گئے آخری ایک روزہ میچ میں بنگہ دیش کو شکست دے کر سیریز بھی اپنے نام کر لی اور اسٹوکس نے ناقابل شکست 47 رنز کی اننگ کھیل کر اس فتح میں اہم کردار ادا کیا۔

یہ انگلینڈ کی لگاتار تیسری ایک روزہ میچوں کی سیریز میں فتح ہے جہاں اس سے قبل انہوں نے سری لنکا اور پاکستان کو شکست سے دوچار کیا تھا۔

اس وقت ایک روزہ میچوں کی عالمی درجہ بندی میں انگلینڈ پانچویں نمبر پر موجود ہے جہاں اس سے اوپر آسٹریلیا، جنوبی افریقہ، نیوزی لینڈ اور ہندوستان کی ٹیمیں موجود ہیں۔

اسٹوکس نے اسکائی اسپورٹس سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ یہ بہت دلچسپ تھا، اگر ہم نے اسی کارکردگی دکھانے کا سلسلہ جاری رکھا تو ہم نمبر ایک بننے کا ہدف حاصل کر لیں گے۔

انگلینڈ کی ٹیم ورلڈ کپ 2015 میں بنگلہ دیش کے ہاتھوں شکست کے بعد پہلے ہی راؤنڈ میں ایونٹ سے باہر ہو گئے تھے تاہم اس کے بعد انگلش بورڈ اور ٹیم میں چند اہم تبدیلیاں کی گئیں جس کے نتیجے میں ورلڈ کپ 2015 کے بعد انگلینڈ سب سے زیادہ تسلسل سے کارکردگی دکھانے والی ٹیم ہے۔

مین آف دی سیریز کا ایوارڈ حاصل کرنے والے آل راؤنڈر نے کہا کہ یہ ٹیم 18 ماہ سے ایک ساتھ رہتے ہوئے ناقابل یقین کرکٹ کھیل رہی ہے۔

یاد رہے کہ موجودہ انگلش ٹیم اپنے اصل کپتان آئن مورگن سے محروم ہے جو سیکیورٹی خدشات کے سبب دورے سے دستبردار ہو گئے تھے اور ان کی غیر موجودگی میں جوز بٹلر ناتجربہ کار ٹیم کی ایسے حریف کے خلاف قیادت کر رہے تھے جس نے گزشتہ چھ ہوم سیریز میں کامیابی حاصل کی۔

ٹیم کے نائب کپتان اسٹوکس نے کہا کہ میں اور بٹلر بہت اچھے سے کام کر رہے ہیں، کرکٹ کس طرح کھیلنی ہے اس حوالے سے ہم جارحانہ سوچ رکھتے ہیں اور اس بات پر عمل درآمد صرف بیٹنگ اور باؤلنگ ہی نہیں بلکہ فیلڈنگ میں بھی کرتے ہیں۔

Leave your vote

0 points
Upvote Downvote

Total votes: 0

Upvotes: 0

Upvotes percentage: 0.000000%

Downvotes: 0

Downvotes percentage: 0.000000%

اپنا تبصرہ بھیجیں